وزیراعلیٰ پنجاب کا راولپنڈی کا اچانک دورہ،پولیس افسران کی غیر حاضری پر برہم ،کارروائی کا حکم 

61

لاہور (نمائندہ جسارت)وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے گزشتہ روز صبح راولپنڈی میں انتظامیہ اور پولیس افسران کے دفاتر کے اچانک دورے کیے۔ وزیراعلیٰ کے اچانک دورے کے موقع پر ڈ پٹی کمشنر راولپنڈی ڈاکٹر عمر جہانگیر ، اے ڈی سی آرمیاں بہزاد عادل، اے سی سٹی نعیم افضل، اے سی صدر عمر افتخار شیرازی، رجسٹری رجسٹرار اور سپرنٹنڈنٹ سمیت متعدد انتظامی افسران و عملے کی عدم حاضری پروزیراعلیٰ نے سخت برہم ہوکر کہا کہ سرکاری افسران اور ملازمین کی طرف سے فرائض منصبی کی ادائیگی میں کسی قسم کی غفلت برداشت نہیں کی جائے گی۔انہوں نے سرکاری افسران کو خبردار کیا کہ قدریں بدل چکی ہیں ، اعلیٰ عہدیداران اور ملازمین اپنی روش بدلیں، خود کو عوام کا خادم سمجھ کر خدمات انجام دیں، دفاتر میں ملاقات کے لیے پرچی سسٹم کا فوری طور پرخاتمہ کیا جائے، افسران دفاتر کے باہر ملاقات کے اوقات نمایاں طور پر آویزاں کریں،دفاتر میں اپنی حاضری یقینی بنائیں،مقررہ اوقات کار کی پابندی کریں،شہریوں کے لیے دفاترکے دروازے کھلے رکھیں۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ افسران دفاتر میں لوگوں کے مسائل کے حل کے لیے اوپن ڈور پالیسی اپنائیں،جو افسر اور عملہ مقررہ وقت پر دفتر نہیں آئے گا، اسے تادیبی کارروائی کا سامنا کرنا پڑے گا۔ وزیراعلیٰ نے کمشنرآفس،ڈپٹی کمشنر آفس اور سی پی او آفس کے اچانک دورے کے دوران افسروں اور عملے کی حاضری کو چیک کیا ۔ وزیراعلیٰ نے افسروں اور عملے کی غیر حاضری پر برہمی کا اظہارکیااورہدایت کی کہ غیر حاضر افسروں اور عملے کی جواب طلبی کی جائے۔ وزیراعلیٰ نے دفاتر میں موجود لوگوں کے مسائل سنے اور ان کے حل کے لیے موقع پر ہی احکامات جاری کیے ۔انہوں نے اس موقع پرضلع کچہری کمپلیکس میں ڈیوٹی پر موجود خاتون افسر اے ڈی سی جی راولپنڈی ملیحہ جمال نے وزیراعلیٰ کو بریفنگ دی- وزیر اعلیٰ پنجاب کے استفسار پر انہیں بتایا کہ افسران انسداد ڈینگی مہم کی مانیٹرنگ کے لیے دفاتر سے باہر ہیں۔ اس موقع پرایک اوور سیز پاکستانی راجا امجد اقبال نے وزیراعلی پنجاب سے گلہ کیا کہ وہ اپنے ملک میں سرمایہ کاری کرنا چاہتے ہیں لیکن وہ گزشتہ ایک سال سے مختلف محکموں اور دفاتر کے دھکے کھا رہے ہیں اور اکثر افسران اپنی سیٹوں پر موجود نہیں ہوتے جس سے وہ دلبرداشتہ ہیں۔ اس پر وزیر اعلیٰ نے ڈپٹی کمشنر راولپنڈی کو مذکورہ شہری کا مسئلہ فوری حل کرنے کی ہدایت کی۔ راجا اقبال نے اس موقع پر خوش ہو کر اپنی طرف سے ڈیمز فنڈ میں 5 ہزار ڈالرز جمع کرانے کا اعلان کیا۔ وزیراعلیٰ نے بلوچستان سے تعلق رکھنے والی خاتون کے مسئلے کے حل کے لیے ایک گھنٹے میں رپورٹ طلب کر لی۔وزیراعلیٰ پنجاب نے کمشنر �آفس اور سی پی او آفس کا دورہ بھی کیا۔ سی پی او بھی اپنے دفتر میں موجود نہیں تھے۔ وزیراعلیٰ نے کمشنر آفس میں محرم الحرام میں امن کے قیام کے لیے امن کمیٹی کے اجلاس میں آئے ہوئے ڈویژن انتظامیہ و پولیس افسران اور علما سے بھی ملاقات کی- وزیراعلیٰ نے کہا کہ افسران منتخب عوامی نمائندوں سے ملاقات کر کے قانون و ضوابط کے مطابق عوامی مسائل کے فوری حل کے لیے ضروری اقدامات کریں تاکہ عام شہری حکومتی اقدامات سے مستفید ہو سکیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ