با مقصد تعلیم کے ذریعے معاشرے کی تعمیر و ترقی میں کردار ادا کیا جا سکتا ہے، مقررین

71

حیدر آباد (نمائندہ جسارت) اخلاقی اقدار دوسروں کو معاف کرنے کے موضوع پر الخدمت آرفن کیئر پروگرام کے تحت ضلع حیدر آباد، بدین، ٹنڈو محمد خان، ڈگری، ڈہرکی، ٹنڈوالہٰیار و دیگر اضلاع میں تقریبات کا انعقاد کیا گیا۔ تقریبات میں بچوں کی تربیت کے لیے 6 اخلاقی اقدار میں سے پانچویں قدر ’’دوسروں کو معاف کرنا‘‘ کے موضوع پر اعجاز باجوہ ودیگر مقرین نے بچوں سے دلچسپ انداز میں گفتگو کی۔ صدر الخدمت ڈہرکی محمد ذیشان،ساجد علی دایو،سلیم احمد ، عبدالشکور، پرنسپل نصیر احمد قائمخانی ،سماجی رہنما شوکت قائمخانی ، حاجی شفیق مغل ،صدر الخدمت ضلع ٹنڈو الہ یار خورشید عالم ، امیر جماعت اسلامی یونس قائمخانی ،ہلال پبلک اسکول سسٹم کے ریجنل منیجر عبداللہ خان اور دیگر اساتذہ کرام اور تعلیمی ماہرین تقریب میں شریک تھے۔مقررین نے اس موقع پر بچوں سے سماجی‘ اخلاقی و اسلامی نکتہ نگاہ سے معاف کرنے کی اہمیت اور خصوصیات سے آگاہ کیا۔ مقررین نے کہا کہ معاف کرنے کودین اسلام میں اخلاقی قدر اور اچھائی سمجھا جاتا ہے۔ معاف وہی کرتا ہے جس سے کسی نے بدسلوکی ہو، نفع نقصان کی پروا کیے بغیر اچھائی یا نیکی کو ہمیشہ ترجیح دی جانی چاہیے ۔ معاف کرنے والے کو ہیرو کا درجہ ملنا چاہیے کیونکہ وہ اس فرد سے اچھائی کرتا ہے جو اسے تکلیف پہنچاتاہے ۔مقررین نے اس موقع پر عالمی یوم خواندگی کے موضوع پر بچوں سے کہا کہ بامقصد تعلیم کے ذریعے ہی معاشرے کی تعمیر وترقی میں کردار ادا کر سکتا ہے۔ اسلام کی اخلاقی اقدار کے ساتھ علم حاصل کرنے کے معاشرے میں انتہائی مثبت نتائج ملتے ہیں، علم کی روشنی سے معاشرے کے ہر طبقے کو منور کرنا ہم سب کی ذمے داری ہے ، تعلیم یافتہ زاور اعلیٰ اقدار والی قوم ہی مضبوط پاکستان کی ضمانت ہے ۔مقررین نے الخدمت کے آرفن کیئر پروگرام کے تحت بچوں کی تعلیمی اوراخلاقی تربیت کی تعریف کی۔پروگرام کے اختتام پر بچوں میں تحائف تقسیم کیے گئے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ