طالبان نے افغان ضلع خام آب پر قبضہ کرلیا،جھڑپوں میں 35 ہلاک 

90

کابل(صباح نیوز+آن لائن)افغانستان کے صوبے جوزجان کے ضلعے خام آب پر طالبان نے قبضہ کر لیا جس کی افغان حکام نے بھی تصدیق کر دی ہے جب کہپرتشدد کارروائیوں میں35 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے ہیں۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق افغان سیکورٹی فورسز سے شدید جھڑپوں کے بعد ضلع خام آب کا کنٹرول طالبان کے قبضے میں آ گیاہے، افغانستان کے صوبے ہلمند میں رات گئے مارٹر بم کے حملے کے نتیجے میں ایک ہی خاندان کے 6 افراد ہلاک اور 6زخمی ہوگئے۔افغان حکام کا کہنا ہے کہ افغان صوبے قندوز میں رات گئے طالبان نے سیکورٹی چیک پوسٹوں پر حملہ کیاجس کے نتیجے میں افغان سیکورٹی فورسز کے 15 اہلکارہلاک اور18زخمی ہوگئے۔افغان میڈیا کے مطابق دہشت گردوں نے حملے میں دشت آرچی کے علاقے میں چیک پوسٹوں کو نشانا بنایا ہے۔ادھر افغان صوبے سرپل کے مرکزی علاقے میں طالبان نے حملہ کیا ہے جس کی افغان حکام نے تصدیق کی ہے،سرپل کے مرکزی علاقے میں طالبان نے رات گئے 3سمت سے حملہ کیا۔افغان حکام کے مطابق سرپل کے مرکزی علاقے میں افغان فورسز اور دہشت گردوں میں جھڑپیں ہوئیں۔دوسری جانب غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق افغانستان کے شمالی حصے میں شدت پسندوں کے ایک حملے میں ملکی دستوں کے 14اہلکار ہلاک ہو گئے ہیں۔سمنگان صوبے کے گورنر کے ترجمان صادق عزیزی کے مطابق اس دوران ہونے والی جھڑپ میں مزید6 اہلکار زخمی ہوئے ہیں جب کہ4 حملہ آور بھی مارے گئے ہیں۔ عزیزی نے اس حملے کی ذمے داری طالبان پر عاید کی ہے۔ ادھر قندوز میں بھی طالبان کے ایک حملے میں13افراد ہلاک ہوئے ہیں۔صوبہ زوانجان میں طالبان کے حملے میں 8 پولیس اہلکار ہلاک ہو گئے۔اس طرح افغانستان میں تشدد کی تازہ کارروائی میں کل35 افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ