نواز شریف کی اہلیہ کلثوم نواز لندن میں انتقال کر گئیں

363

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائد سابق وزیراعظم نوازشریف کی اہلیہ کلثوم نواز لندن کے اسپتال میں دوران علاج انتقال کر گئیں ، حسن نواز، سابق وزیراعلی پنجاب اور ان کے دیور شہباز شریف نے بیگم کلثوم نواز کے انتقال کی تصدیق کر دی۔

 تفصیلات کے مطابق لندن کے ہارلے اسٹریٹ کلینک میں زیر علاج سابق وزیراعظم کی اہلیہ بیگم کلثوم نواز کی طبیعت گزشتہ رات ایک مرتبہ پھر انتہائی تشویشناک ہوگئی تھی جس پر انہیں آج برطانوی وقت کے مطابق ساڑھے دس بجے وینٹی لیٹر پر منتقل کر دیا گیا تھا جبکہ ڈاکٹرز ان کی صحت کے حوالے سے کچھ نہیں بتا رہے تھے تاہم اب حسن نواز شریف نے تصدیق کی ہے کہ ان کی والدہ انتقال کر گئی ہیں۔

ہارلے اسٹریٹ کلینک کے ذرائع کے مطابق بیگم کلثوم نواز کے پھیپھڑوں کا مسئلہ سنگین ہو گیا جس کے باعث انہیں وینٹی لیٹر پر ڈالنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔ بیگم کلثوم نواز اس وقت لائف سپورٹ اور گردوں کے ڈائلسز پر جبکہ ان کے اہل خانہ نے صحت کی خرابی کی تصدیق کرتے ہوئے دعا کی اپیل کی تھی تاہم اب وہ ہم میں نہیں رہیں وہ لندن کے ہارلے سٹریٹ کلینک میں انتقال کر گئی ہیں۔ ان کے بیٹے حسن نواز، سابق وزیراعلی پنجاب اور ان کے دیور شہباز شریف نے بیگم کلثوم نواز کے انتقال کی تصدیق کر دی ہے۔شہباز شریف نے کہا ہے کہ میت لینے کے لیے وہ لندن جائیں گے۔

خاندانی ذرائع کے مطابق بیگم کلثوم نواز کی میت پاکستان لانے کا فیصلہ کیا گیا، بیگم کلثوم نواز کی تدفین پاکستان میں ہو گی، جیسے ہی میڈیکل سرٹیفکیٹ کلیئرنس ہو گی اس کے بعد بیگم کلثوم نواز کی میت کو پاکستان لایا جائے گا،برطانیہ میں بہت زیادہ لیگل ضروریات کو پورا کریا جائے گا تب ہی میت کو واپس لایاجاسکتا ہے جس میں ایک ہفتے سے زائد کا وقت لگ سکتا ہے۔بیگم کلثوم نواز کو گزشتہ برس گلے کا کینسر تشخیص ہوا تھا۔

نواز شریف کو نااہل قرار دیئے جانے کے بعد بیگم کلثوم نواز نے این اے 120 سے ضمنی انتخاب جیتا تھا تاہم بیرون ملک ہونے کے باعث وہ حلف نہیں اٹھا سکیں۔ کلثوم نواز تین بار خاتون اول بنیں، کلثوم نواز 1999 سے 2002 تک صدر پاکستان مسلم لیگ (ن) رہ چکی تھیں۔

اہلیہ نواز شریف کلثوم نواز 1950 میں پیدا ہوئیں اور اپریل 1971 میں ان کی سابق وزیراعظم نواز شریف سے شادی ہوئی۔ کلثوم نواز کو 3 مرتبہ خاتون اول رہنے کا اعزاز حاصل ہے۔ وہ رکن قومی اسمبلی بھی رہیں۔

بیگم کلثوم نواز کو 3 مرتبہ خاتون اول رہنے کا اعزاز حاصل ہے۔ وہ رکن قومی اسمبلی بھی رہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ