شان رسول ؐ میں گستاخی نامنظور!! 

62

فاطمہ قمر

گزشتہ تین ماہ سے گیرٹ ویلڈرز نامی ڈچ شخص نبی اکرم ؐ کی شان مبارک میں مسلسل گستاخی کا مرتکب ہو رہا ہے اور انتہائی افسوس کی بات ہے کہ تمام امت مسلمہ اس وقت خاموش تماشائی ہے ماسوائے چند ممالک کے کہ انہوں نے غیرت مسلم کا مظاہرہ کرتے ہوئے ہالینڈ کے سفیر کو طلب کیا اور اسے ملک سے نکال باہر کیا اور احتجاج کیا۔ ہم بحیثیت امت اس قدر بے حس ہو چکے ہیں کہ ہمیں اب کسی بات سے کوئی فرق نہیں پڑتا چاہے دنیا کے کسی بھی حصے میں مسلمانوں کا خون بہایا جائے یا نبی اکرم ؐ کی شان میں گستاخی کی جائے۔
اس وقت ہمیں اسلام کے دشمنوں کو منہ توڑ جواب دینا چاہیے جسے رہتی دنیا تک یاد رکھا جائے اور کوئی دوبارہ ایسی جرات نہ کر سکے۔ ہم سب نبی اکرم ؐ سے محبت کے دعوے تو بہت کرتے ہیں لیکن حیرت کا مقام یہ ہے کہ اگر ان ہی محبت کے دعوے داروں سے نبی اکرم ؐ کی روزمرہ کی زند گی کے بارے میں پوچھا جائے یا ان کے معمولات و معاملات کے بارے میں تو ان کی اکثریت اس سے لاعلمی کا اظہار کرتی نظر آتی ہے جب کہ معرفت محبت کی پہلی سیڑھی ہے۔ ہم کسی کو جانے بغیر اس سے محبت کا دعویٰ نہیں کر سکتے اور اگر کوئی ایسا کرتا ہے تو وہ محبت کا جھوٹا دعوے دار ہے۔
اب وقت کا تقاضا اور ان ملعونوں کی گستاخی کا جواب یہ ہے کہ ہالینڈ کی تمام مصنوعات کا مکمل طور پر بائیکاٹ کیا جائے اور ہر شخص یہ سوچ کر بائیکاٹ کرے کہ روز قیامت ہم نے رب ذوالجلال کو منہ دکھانا ہے اور اس وقت میں کیا جواب دوں گا کہ جب ربّ تعالیٰ تمام دنیا کے سامنے پوچھیں گے کہ جب میرے حبیب کی شان میں گستاخی ہو رہی تھی تو تم نے کیا کیا تھا؟؟ اس کے علاوہ اپنی روز مرہ زندگی میں نبی اکرم ؐ کی سیرت کا مطالعہ کرنا اور اس پر عمل کرنا اپنا معمول بنا لیں۔ اپنے گھروں میں نبی اکرم ؐ کی حیات طیبہ کے ایمان افروز واقعات ایک دوسرے کو بتائیں اور اس سے سبق حاصل کریں۔ ناموس رسالت کے لیے اقدامات کرنے والوں کے واقعات کو بھی پڑھیں اور خاص طور پر بچوں کوسنائیں۔ اس سے ان کے دل میں بھی نبی اکرم ؐ کی محبت کا اور ان کی عزت و ناموس پر کٹ مرنے کا جذبہ پیدا ہو گا۔ جن لوگوں کے پاس لکھنے کی صلاحیت ہے، وہ اپنی اس صلاحیت کا استعمال کریں اور اپنا کردار ادا کریں۔
عملی طور پر ایک اچھا مسلمان بننے کی کوشش کریں اور اپنے گھر والوں کو بھی اس بات کی اہمیت سے آگاہ کریں کہ یہی حب رسول کا تقاضا ہے۔ جب ہم نبی اکرم ؐ کی سنت پر عمل کرنا شروع ہو جائیں گے تو واقعی ربّ تعالیٰ کے ہاں سے بھی نصرت آئے گی اور ہماری غیب سے مدد ہو گی۔ بقول شاعر
فضائے بدر پیدا کر، فرشتے تیری نصرت کو
اتر سکتے ہیں گردوں سے قطار اندر قطار اب بھی

Print Friendly, PDF & Email
حصہ