چارسدہ اسپتال میں 3 دن پرانی نعش گھنٹوں پڑی رہی،ورثا کا احتجاج

33

چارسدہ (آئی این پی ) چارسدہ اسپتال میں تین دن پرانی نعش گھنٹوں پڑی رہی مگر کوئی ڈاکٹر پوسٹ مارٹم کیلیے نہیں آیا ،لواحقین سراپا احتجاج ، نسیم اللہ نامی شہری تین دن پہلے گھر سے پر اسرار طور پر لاپتا ہو ئے تھے جن کی نعش دریائے سوات کے قریب کھیتوں سے ملی۔ تفصیلات کے مطابق تین دن پہلے نسیم اللہ ولدمحید سکنہ سردریاب گل آباد پر اسرار طور پر لا پتا ہو گیا تھا ۔ اتوار کے روز مقتول کی نعش دریائے سوات کے قریب کھیتوں سے برآمدہوئی ۔ اسپتال میں میڈیا سے بات چیت کر تے ہوئے مقتول کے بھائی اخترام نے کہا کہ تین دن پہلے ان کا بھائی نسیم اللہ بچوں کو اسکول چھوڑنے گیا پھر واپس گھر نہیں آیا، تلاش و بسیار کے بعد آج ان کی نعش دریائے سوات کے قریب کھیتوں سے برآمد ہوئی ۔ انہوں نے کہاکہ 3 گھٹنے تک ان کے بھائی کا نعش چارسدہ اسپتال میں پڑا رہا مگر کوئی ڈاکٹر پوسٹ مارٹم کیلیے نہیں آیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے اسپتال میں خود اپنے بھائی کے بد ن کی صفائی و ستھرائی کی ۔ واقعہ کے حوالے سے سابق امید وار پی کے 59بابر علی نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ اسپتال عملے کے خلاف بھرپور کارروائی کی جائے ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ