نوابشاہ، محکمہ تعلیم کے 60 افسران کیخلاف مقدمہ درج، تفتیش شروع

41

نواب شاہ (نمائندہ جسارت) اینٹی کرپشن حکام نے جعلسازی کرکے حکومت کے سات کروڑ روپے کی کرپشن ثابت ہونے پر محکمہ تعلیم ضلع بے نظیر آباد کے 60 افسران کیخلاف مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کردی۔ اس سلسلے میں اینٹی کرپشن ذرائع کے مطابق محکمہ تعلیم نواب شاہ سمیت ضلع کے اساتذہ کے نام پر جعلی ڈیفرنس بلوں اور دیگر جعلی بلوں کے ذریعے سات کروڑ روپے سے زائد کی رقم خورد برد کی گئی، جس کا انکشاف ہونے پر چیف سیکرٹری کی جانب سے انکوائری کے بعد مزید تفتیش کے لیے اس معاملے کو اینٹی کرپشن کے حوالے کردیا گیا جس نے مکمل تفتیش اور انکوائری کے بعد ضلع بینظیر آباد محکمہ تعلیم کے 60 افسران جن میں تین تعلقہ ایجوکیشن آفسیر، ٹریژری آفس کے پانچ سب اکاؤنٹنٹ، چالیس سے زائد اسکولوں کے ہیڈ ماسٹرز اور محکمہ تعلیم کے افسران سمیت 60 ملزمان کیخلاف سات کروڑ روپے کی رقم جعل سازی کے ذریعے خورد برد کرنے اور حکومتی خزانے کو نقصان پہنچانے کیخلاف مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔ مقدمے میں ٹریژری آفس کے سب اکاؤنٹنٹ طالب حسین، غلام مرتضیٰ و دیگر اسسٹنٹ ڈسڑکٹ اکاؤنٹس آفیسر حسن جان چنگیزی، آڈیٹر ممتاز علی، محمد رفیق و دیگر، محکمہ تعلیم تعلقہ سکرنڈ کے ایجوکیشن آفیسر شامہ گلشن، عبدالقادر لکھمیر، تعلقہ ایجوکیشن نواب شاہ کے آفیسر عظمیٰ نعمان، تعلقہ ایجوکیشن دوڑ کے آفیسر شہناز پرویز چنا سمیت چالیس سے زائد گورنمنٹ اسکولوں کے ہیڈ ماسٹر اور دیگر اعلیٰ افسران شامل ہیں۔ اینٹی کرپشن ذرائع کے مطابق کروڑوں روپے کی کرپشن ثابت ہونے کی انکوائری مکمل ہونے کے بعد مقدمہ درج کیا گیا، جلد گرفتاریاں شروع کی جائیں گی۔ دوسری جانب جعلی بلوں اور اساتذہ کے جعلی ڈیفرنس بلوں کی مد میں سات کروڑ روپے سے زائد رقم خورد برد کرنے والے ملزمان کی جانب سے گرفتاریوں سے بچنے کے لیے کوششیں شروع کردی گئی ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ