حیدر آباد، رسالہ روڈ پر سیوریج کے پانی بہنے سے آمدورفت میں مشکلات

30

حیدر آباد (نمائندہ جسارت) ایک ہفتہ گزرنے کے باوجود رسالہ روڈ پر گٹروں سے بہنے والے سیوریج کے پانی کو روکنے کے لیے گٹروں کی صفائی کا کام مکمل نہیں کیا جاسکا، گول بلڈنگ سے گاڑی کھاتہ تک پوری سڑک پر دن رات سیوریج کا پانی بہنے سے علاقہ مکینوں، ٹریفک اور پیدل چلنے والوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ ڈی سی کمپاؤنڈ کے ساتھ شو پارٹس مارکیٹ کے دکانداروں کی جانب سے سڑک پر قائم ورکشاپس نے صورتحال کو انتہائی گمبھیر کردیا ہے۔ ہفتہ گزرنے کے باوجود شہر کی مصروف ترین شاہراہ رسالہ روڈ پر گول بلڈنگ سے گاڑی کھاتہ چوک تک گٹروں سے سیوریج کا پانی بہہ رہا ہے جبکہ بلدیہ انتظامیہ کی جانب سے مذکورہ گٹر لائنوں کو ایچ ڈی اے کے زیر انتظام قرار دیا گیا ہے۔ ایچ ڈی اے کے عملے نے جمعے اور ہفتے کے روز گٹروں کی صفائی کرنے کی کوشش کی مگر ناکامی پر کھلے گٹر اور کچرے کے انبار سڑک کے درمیان چھوڑ کر غائب ہوگئے، جس کے باعث پورے علاقے میں سیوریج کا پانی بہہ رہا ہے۔ رسالہ روڈ ڈپٹی کمشنر ہاؤس کی مشرقی دیوار ڈی سی کمپاؤنڈ کے ساتھ سڑک پر شو پارٹس مارکیٹ کے دکانداروں کی جانب سے ورکشاپس قائم ہیں، جہاں سارا دن سڑک کے کنارے اور درمیان میں گاڑیاں کھڑی کرکے مکینک کام کرتے ہیں، جبکہ علاقہ مکینوں کے احتجاج پر مذکورہ ورکشاپس کو ختم کردیا گیا مگر بعد ازاں ڈپٹی کمشنر آفس کے ایک اعلیٰ آفیسر کی ملی بھگت سے سڑک پر ورکشاپس قائم کرنے کے لیے تحریری اجازت نامہ جاری کیا گیا ہے۔ عدالت عظمیٰ کے تشکیل کردہ فراہمی ونکاسی آب کمیشن کے سربراہ جسٹس (ر) امیر ہانی مسلم اور سندھ ہائی کورٹ نے شہر بھر سے تجاوزات کے خاتمے اور سڑکوں گلیوں میں قائم ورکشاپس ختم کرنے کے لیے کمشنر حیدر آباد کو احکامات دیے ہیں مگر ان احکامات پر عملدرآمد نہیں کیا گیا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ