حیدر آباد، آل سندھ لیڈی ہیلتھ ورکرز کے انتخابات، عظمیٰ جوکھیو صدر منتخب 

22

حیدر آباد (نمائندہ جسارت) آل سندھ لیڈی ہیلتھ ورکرز ایمپلائز یونین ڈسٹرکٹ حیدر آباد کے انتخابات میں عظمیٰ جوکھیو بھاری اکثریت سے ووٹ لے کر صدر منتخب، یونین اولیت کی بنیادوں پر لیڈی ہیلتھ ورکرز کے بنیادی وجائز مسائل کو دھرنوں اور مظاہروں کے بجائے ہیلتھ ڈپارٹمنٹ کے افسران سے مذاکرات کے ذریعے حل کرائیں گے، منتخب صدر عظمیٰ جوکھیو کا لیڈی ہیلتھ ورکرز سے خطاب۔ لیڈی ہیلتھ ورکرز یونین کی سابقہ صدر رخسانہ مغل کی ریٹائر منٹ کے بعد صدر کے انتخاب کے لیے گزشتہ دن ڈی ایچ او آفس میں حلیمہ لغاری، ذوالقرنین اور بشریٰ آرائیں پینل کے امیدواروں میں مقابلہ ہوا۔ انتخابات میں حیدر آباد کی 47 لیڈی ہیلتھ سپروائزر نے ووٹ کا حق استعمال کیا، الیکشن دونوں پینل کی رہنماؤں حلیمہ لغاری اور بشریٰ آرائیں کی نگرانی میں ہوئی، جس میں عظمیٰ جوکھیو 35 ووٹ لے کر لیڈی ہیلتھ ورکرز یونین حیدر آباد کی صدر منتخب ہوئیں مدمقابل سعیدہ شاہین نے صرف 13 ووٹ حاصل کیے۔ صدر منتخب ہونے پر لیڈی ہیلتھ ورکرز نے عظمیٰ جوکھیو کو اجرک اور پھولوں کے ہار پہنائے اور مٹھائی تقسیم کی۔ تقریب سے آل سندھ لیڈی ہیلتھ ورکرز ایمپلائز یونین سندھ کی صدر حلیمہ لغاری نے کہا کہ ہمارے پینل کے امیدوار کی کامیابی اس بات کا منہ بولتا ثبوت ہے کہ ہم نے اصولوں کی بنیاد پر ہیلتھ ورکرز کے مسائل کے حل کے لیے جدوجہد کی اور عظمیٰ جوکھیو کی کامیابی اسی جدوجہد کا نتیجہ ہے۔ نومنتخب صدر عظمیٰ جوکھیو نے کہا کہ لیڈی ہیلتھ ورکرز کو 2012ء میں عدالت عظمیٰ کے احکامات پر مستقل کیا گیا مگر 6 سال گزرنے کے باوجود آج تک ٹریژری میں ہیلتھ ورکرز کی آئی ڈیز نہیں کھولی گئی۔ ہیلتھ ورکرز آج بھی تین تین ماہ کی تنخواہوں سے محروم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل پروگرام واحد سرکاری محکمہ ہے جہاں ہیلتھ ورکرز کم تنخواہ میں بھی اپنی جان ہتھیلی پر رکھ کر ایمانداری سے ڈیوٹیاں سرانجام دیتی ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ