حکومت قیمتیں نہ بڑھائے‘ مزدور محاذ

79

پاکستان مزدور محاذ کا اجلاس زیر صدارت ڈاکٹر محمد طفیل منعقد ہوا اجلاس میں اقتصادی رابطہ کمیٹی کے فیصلوں کا جائزہ لیا گیا۔اجلاس کے شرکاء نے بجلی کی چوری کی روک تھام کے اقدامات کو ایک بہتر عمل قرار دیتے ہوئے کہا کہ حکومت بجلی کی پیداوار اور ترسیلی نظام کی خامیوں کی طرف بھی توجہ دے، ان خامیوں کی وجہ سے اربوں روپے کی بجلی ضائع ہو جاتی ہے۔ رہی بات بجلی کی قیمتوں میں اضافہ کرنے کی تو یہ عمل نہ صرف مہنگائی میں اضافہ کا باعث ہو گا ساتھ ہی ساتھ پیداواری لاگت بھی بڑھ جائے گی جس کا اثر پاکستان کی برامدات پر بھی پڑے گا۔ اسی طرح گیس کی قیمتوں میں اضافہ بھی مہنگائی میں اضافہ کا سبب بنے گا، بہتر ہو گا کہ حکومت گیس کی چوری کو روکے اور اس کے ترسیلی نظام کی خامیوں کو کنٹرول کرے اور ان محکموں کے اخراجات کو کم کرنے کی طرف توجہ دے۔ عوام نے اس امید پر موجودہ حکومت کو اپنا نجات دھندہ سمجھ کر ووٹ دیے ہیں کہ وہ نہ تو کسی صورت بیروزگار ہونا چاہتے ہیں اور نہ ہی مہنگائی کی چکی میں پسنا چاہتے ہیں۔ کرپشن پر کنٹرول کیا جائے اور صنعت اور زراعت کو جدید بنیادوں پر ترقی دے کرقومی وسائل میں اضافہ کیا جا سکتا ہے اور بے روز گاری کے مسئلے پر بھی قابو پایا جا سکتا ہے۔ اس کے علاوہ اقتصادی رابطہ کمیٹی کو ملک کی صنعتی اور زرعی ضرویات کو مد نظر رکھتے ہوئے جدید بنیادوں پر تربیت کے ادارے بنانا ہوں گے اور پہلے سے موجود اداروں کی صنعتی اور زرعی ضرویات کی اپ گریڈیشن کرنا ہو گی۔ مزدور محاذ کے اجلاس میں محاذ کے رہنماؤں شوکت چودھری، ڈاکٹرعلی امین بیگم، شمیم چودھری اور فضل واحد اور اقبال ظفر نے شرکت کی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ