’’نیشنل پروکیورمنٹ ایوارڈ2018‘‘ سیسی نے حاصل کرلیا

76

 

انسٹی ٹیوٹ آف ٹینڈرمینجمنٹ (آئی ٹی ایم) لاہور کے زیراہتمام اولین ’’نیشنل پروکیورمنٹ ایوارڈ2018‘‘ کا انعقاد بھوربن مری میں ہوا جس میں چاروں صوبوں کے علاوہ گلگت بلتستان، آزادکشمیر اور وفاق سے پروکیورمنٹ کے ماہرین نے شرکت کی۔ اس موقع پر ہرصوبے سے ایک ماہر پروکیورمنٹ کوپروکیورمنٹ ایکسپرٹ کا ایوارڈ دیا گیا۔ صوبہ سندھ سے پروکیورمنٹ ایکسپرٹ کا ایوارڈ سندھ ایمپلائزسوشل سیکورٹی انسٹی ٹیوشن (سیسی) کے ڈائریکٹرپروکیورمنٹ ڈاکٹر سعادت احمد میمن کو دیا گیاجو ادارے کے لیے اعزاز ہے۔ بھوربن کے مقامی ہوٹل میں 29 اگست کو نیشنل ٹریننگ بیورو، منسٹری آف فیڈرل ایجوکیشن اینڈ پروفیشنل ٹریننگ کے ذیلی ادارے انسٹی ٹیوٹ آف ٹینڈر مینجمنٹ (آئی ٹی ایم) لاہور کے زیراہتمام منعقد ہونے والی تقریب میں یہ ایوارڈڈاکٹرسعادت میمن نے صوبہ خیبرپختونخواہ کے سابق ڈی جی نیب محمدمصدق عباسی سے وصول کیا۔ اس موقع پر ایم ڈی PEPRAسندھ محمداسلم غوری بھی موجود تھے۔ واضح رہے کہ سندھ سے پروکیورمنٹ ایکسپرٹ کے لیے چھ ناموں کو شارٹ لسٹ کیا گیا تھا جس میں سندھ سوشل سیکورٹی کے ڈائریکٹرپروکیورمنٹ ڈاکٹرسعادت احمد میمن صوبہ سندھ سے ’’پروکیورمنٹ ایکسپرٹ ایوارڈ ‘‘کے حق دار قرار پائے۔ کمشنر سندھ سوشل سیکورٹی ڈاکٹرنسیم الغنی سہتو نے پروکیورمنٹ ایکسپرٹ کا ایوارڈ ملنے پر ڈاکٹرسعادت میمن کو مبارکباد دی اور کہاکہ یہ سیسی کے لیے بڑااعزاز ہے۔ انہوں نے کہاکہ ادارے کا سافٹ امیج پروان چڑھانے کے لیے تمام افسران اسی جذبہ اور لگن سے کام کریں۔ یاد رہے کہ اس سے قبل عدالت عالیہ سندھ اور آئی ایل او نے بھی سیسی کے شفاف نظام کو دیکھتے ہوئے سانحہ بلدیہ کے متاثرین میں پنشن کی شفاف اور منصفانہ طریقہ کار اور ادائیگی پر نہ صرف اطمینان کا اظہار کیا تھا بلکہ آئی ایل او نے اسے اپنا کنسائنی بھی مقرر کیاہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ