غزہ میں اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے زخمی ہونے والا فلسطینی لڑکا دم توڑ گیا

57
غزہ: اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے شہید ہونے والے بلال مصطفی خفاجہ اور احمد مصباح ابوالطیور کو تدفین کے لیے لے جایا جارہا ہے
غزہ: اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے شہید ہونے والے بلال مصطفی خفاجہ اور احمد مصباح ابوالطیور کو تدفین کے لیے لے جایا جارہا ہے

غزہ (انٹرنیشنل ڈیسک) فلسطین کے محصور علاقے غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے زخمی ہونے والا ایک اور نوجوان دم توڑ گیا۔فلسطینی ذرائع ابلاغ کے مطابق 16سالہ احمد مصباح ابوالطیور جمعہ کے روز سرحد پر احتجاج کے دوران اسرائیلی فوج کی گولی لگنے سے زخمی ہوا تھا۔ زخمی لڑکا ہفتے کے روز دم توڑ گیا۔ یاد رہے کہ جمعہ کے روز فائرنگ سے ایک اور 17سالہ نوجوان بلال مصطفی خفاجہ بھی شہید ہوا تھا۔ دوسری جانب اسرائیلی وزیر دفاع آوی گیڈور لائبرمین نے شمالی غزہ کو غرب اردن سے ملانے والی گزرگاہ ایریز گزرگاہ آیندہ جمعرات تک کے لیے بند کردی۔ عبرانی میڈیا کے مطابق جمعہ کے روز ایریز گزرگاہ پر پیش آنے والے پرتشدد واقعات کے بعد گزرگاہ کو ایک ہفتے کے لیے بند کیا گیا۔ اس دوران صرف ان افراد کو گزرگاہ عبورکرنے کی اجازت ہوگی، جن کے پاس اسرائیلی حکام کی طرف سے جاری کردہ اجازت نامے ہوں گے۔ یاد رہے کہ 2 روز کے دوران ایریز گزرگاہ کے قریب فلسطینی شہریوں نے احتجاجی مظاہرے کیے اور گزرگاہ کو کھولنے کے ساتھ فلسطینی پناہ گزینوں کی واپسی کے لیے نعرے لگائے تھے۔
فلسطینی لڑکا

Print Friendly, PDF & Email
حصہ