۔500 ارب واپس لے آئیں تو عوام پر بوجھ ڈالنے کی ضرورت نہیں ہوگی،سراج الحق 

143
سرگودھا: امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق اجتماع ارکان سے خطاب کررہے ہیں
سرگودھا: امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق اجتماع ارکان سے خطاب کررہے ہیں

لاہور (نمائندہ جسارت) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ حکومت 500 ارب ڈالر واپس لے آئے تو عوام پر بوجھ ڈالنے کی ضرورت نہیں ہوگی‘ عوام پی ٹی آئی حکومت سے غربت، مہنگائی اور بے روزگاری کے خلاف انقلابی اقدامات کی توقع رکھتے ہیں اور وزیراعظم عمران خان نے کامیابی کے بعد پہلے خطاب میں قوم سے یہی وعدے کیے تھے کہ وہ ایک کروڑ نوجوانوں کو نوکریاں اور 50 لاکھ بے گھر افراد کو چھت دیں گے‘ سودی معیشت کا خاتمہ کریں گے اور ملک کو قرضوں کی لعنت سے نجات دلا کر خود انحصاری کے باعزت راستے پر چلیں گے‘ غربت، جہالت اور لوڈشیڈنگ جیسے مسائل پر قابو پانا ان کی حکومت کی اولین ترجیح ہوگی مگر جیسے جیسے وقت گزر رہا ہے‘ عوام کی پریشانیوں میں اضافہ ہو رہا ہے‘ حکومت نے آتے ہی گیس، بجلی اور کھاد کی قیمتوں میں اضافہ کر کے عوامی توقعات کا خون کیا ہے‘عوام پر مہنگائی کا بوجھ لادنے کے بجائے حکومت کو چوروں اور لٹیروں سے لوٹی گئی قومی دولت کی طرف توجہ دینی چاہیے‘ حکومت یومیہ12 ارب روپے کی کرپشن کوروکنے کیلیے اقدامات کرے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سرگودھا میں اجتماع ارکان سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اجتماع سے جماعت اسلامی پنجاب کے امیر میاں مقصود احمد اور ڈپٹی سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان اظہراقبال حسن نے بھی خطاب کیا ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ 25 جولائی کے انتخابات میں جتنے ووٹ مسترد ہوئے‘ قیام پاکستان سے لے کر 2018 ء تک ہونے والے تمام انتخابات میں اتنے ووٹ مسترد نہیں ہوئے تھے‘ جیتنے والوں کو آج تک اپنی جیت کا یقین نہیں آرہا اور ہارنے والے پریشان ہیں کہ وہ ہار کیسے گئے‘ الیکشن کمیشن صاف اور شفاف انتخابات کروانے میں مکمل طور پر ناکام رہا‘ الیکشن کمیشن نے پری پول اور پوسٹ پول رگنگ کو روکنے میں مجرمانہ غفلت کی ‘ حکومت اپنے وعدوں کے برعکس عوام کو ریلیف دینے کے بجائے لوگوں پر مہنگائی کا اضافی بوجھ لاد رہی ہے ‘عالمی اسٹیبلشمنٹ پاکستان سمیت اسلامی ممالک میں دینی جماعتوں کا ہر صورت راستہ روکنا چاہتی ہے‘ عالمی استعمار اسلام پسند قوتوں کو جمہوری راستے سے بھی اقتدار میں آنے کا موقع نہیں دینا چاہتا۔ سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ جماعت اسلامی آنے والے بلدیاتی انتخابات میں بھر پور طریقے سے حصہ لے گی‘ ہم اپنے مخالفین کے لیے میدان کھلا نہیں چھوڑیں گے‘ کارکنان بلدیاتی انتخابات کی منظم اور مربوط طریقے سے تیاری کریں۔ انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی اسلامی و خوشحال پاکستا ن کے قیام کے لیے اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔ جماعت اسلامی کی ’’احتساب سب کا ‘‘ اور کرپشن فری پاکستان تحریک جاری ہے‘ ہم نے پاناما لیکس کے دیگر436 ملزمان کے احتساب کے لیے عدالت عظمیٰ میں درخواست دی مگر ابھی تک اس حوالے سے کوئی پیش رفت نہیں ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت بیرونی بینکوں میں پڑی قومی دولت واپس لانے کے لیے موثر اقدامات کرے ‘ پاکستان کا 500 ارب ڈالر سے زیادہ سرمایہ بیرونی بینکوں میں پڑا ہے ‘ لندن، دبئی اور نیویارک میں اربوں ڈالرز کی جائدادیں اس کے علاوہ ہیں‘ حکومت کو چاہیے کہ اس سرمائے کو جلد از جلد پاکستان لانے کا انتظام کرے‘ اگر حکومت12 ارب روپے کی روزانہ ہونے والی کرپشن کو روک لے تو اسے عوام پر بوجھ ڈالنے کی ضرورت نہ پڑے گی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ