قال اللہ تعالی و قال رسول اللہ ﷺ

92

ایسے ہی لوگ حقیقی مومن ہیں ان کے لیے ان کے رب کے پاس بڑے درجے ہیں قصوروں سے درگزر ہے اور بہترین رزق ہے ۔ (اِس مال غنیمت کے معاملہ میں بھی ویسی ہی صورت پیش آ رہی ہے جیسی اْس وقت پیش آئی تھی جبکہ) تیرا رب تجھے حق کے ساتھ تیرے گھر سے نکال لایا تھا اور مومنوں میں سے ایک گروہ کو یہ سخت ناگوار تھا ۔ وہ اس حق کے معاملہ میں تجھ سے جھگڑ رہے تھے دراں حالے کہ وہ صاف صاف نمایاں ہو چکا تھا ان کا حال یہ تھا کہ گویا وہ آنکھوں دیکھے موت کی طرف ہانکے جا رہے ہیں ۔ یاد کرو وہ موقع جب کہ اللہ تم سے وعدہ کر رہا تھا کہ دونوں گروہوں میں سے ایک تمہیں مِل جائے گا تم چاہتے تھے کہ کمزور گروہ تمہیں ملے مگر اللہ کا ارادہ یہ تھا کہ اپنے ارشادات سے حق کو حق کر دکھائے اور کافروں کی جڑ کاٹ دے ۔ (سورۃ الانفال:4تا7)

سید الانبیاء ؐ نے فرمایا: بنی اسرائیل پر فرمانروائی اور ان کی سیاست160انبیاء علیہم السلام کیا کرتے تھے، جب بھی کوئی نبی فوت ہو جاتا تو دوسرا نبی اس کا جانشین ہوجاتا تھا مگر میرے بعد کوئی نبی نہیں، البتہ خلفاء ضرور ہوں گے، اور بکثرت ہوں گے۔ (یعنی پھر آپ کے خلفاء امت کی سیاست و قیادت کے منصب پر فائز رہیں گے۔) (بخاری، مسلم)
رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: ’’جس نے کتاب اللہ کا ایک حرف پڑھا اُسے اس کے بدلے ایک نیکی ملے گی، اور ایک نیکی دس گنا بڑھا دی جائے گی، میں نہیں کہتا ’’الم‘‘ ایک حرف ہے، بلکہ ’’الف‘‘ ایک حرف ہے، ’’لام‘‘ ایک حرف ہے اور ’’میم‘‘ ایک حرف ہے‘‘۔ (جامع ترمذی)

Print Friendly, PDF & Email
حصہ