اقتصادی مشاورتی کونسل اجلاس،آئی ایم ایف سے قرض لینے ودیگر معاملات پر غور

56
اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان اقتصادی مشاورتی کونسل کے اجلاس سے خطاب کررہے ہیں
اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان اقتصادی مشاورتی کونسل کے اجلاس سے خطاب کررہے ہیں

اسلام آباد (آن لائن) وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ہمیں ملک کو ہر قیمت پر معاشی بحران سے نکلنا ہے جبکہ ٹیکس ریٹرن میں اضافے کے لیے ہنگامی اقدامات کرنا ہوں گئے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اقتصادی مشاورتی کونسل کے اجلاس میں کیا۔ تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت اقتصادی مشاورتی کونسل کے اجلاس میں آئی ایم ایف سے قرضہ لینے کے معاملے ساتھ ساتھ دیگر اہم معاملات پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔اجلاس میں وزیر خزانہ اسد عمر نے معاشی صورتحال پر بریفنگ دی
جبکہ آئی ایم ایف سے قرضہ لینے کے معاملے پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔قرضوں پر انحصار کم کرنے کے لیے بھی تجاویز پر غور اور ٹیکس محصولات میں اضافے کا معاملہ بھی زیر غور آیا۔ اجلاس کے دوران وزیر اعظم عمران خان کاکہنا تھا کہ ہمیں ملک کو ہر قیمت پر معاشی بحران سے نکلنا ہے ۔ٹیکس ریٹرن میں اضافے کے لیے ہنگامی اقدامات کرنا ہوں گے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ زر مبادلہ میں اضافہ ناگزیر ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ اقتصادیات میراشعبہ نہیں،میں اس پر کونسل سے سیکھناچاہتاہوں۔ملک کے لیے سب کو مل کر کام کرنا ہو گا۔ واضح رہے کہ حکومت کو اس وقت شدید مالی بحران کا سامنا ہے ۔اس بحران پر قابو پانے اور بینکوں کو قرض واپس کرنے کے لیے 9.2بلین ڈالر کی بروقت ضرورت ہے وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے عہد ے کا چارج سنبھالنے کے بعد آئی ایم ایف سے بیل آؤٹ پیکج لینے کا عندیا دیا تھا لیکن اپوزیشن کی تنقید کے بعد حکومت بیل آؤٹ پیکج لینے سے کترا رہی ہے جبکہ ماہرین معیشت کا کہنا ہے کہ حکومت کے پاس آئی ایم ایف کے پاس جانے کے سوا اور کوئی بھی آپشن کار آمد ثابت نہیں ہو گا حکومت کوشش کے باوجود اتنی بڑی رقم کا انتظام نہیں کر سکتی ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ