گیس کی لوڈشیڈنگ کرکے عوام کو پتھروں کے دور میں دھکیلا جارہا ہے ،شفیق آرائیں

45

سکھر(نمائندہ جسارت) سکھر موٹر ورکس ایسوسی ایشن کے رہنما شفیق آرائیں نے کہا ہے کہ شہر کے گنجان آبادی والے علاقوں میں گیس کی لوڈشیڈنگ اور پریشر میں نمایاں کمی کرکے عوام کو پتھروں کے دور میں دھکیل دیا ہے، صبح، دوپہر اور رات کے اوقات میں گیس نہ ہونے کے باعث لوگ لکڑیاں، کوئلے جلاکر کھانا پکانے پر مجبور ہوگئے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دفتر میں شہریوں کے مختلف وفود سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر اصغر علی بھٹی، نثار راجپوت، نعیم مغل ودیگر بھی موجود تھے۔ شفیق آرائیں کا کہنا تھا کہ طویل عرصے سے سکھر کے شہری سوئی گیس کے پریشر میں نمایاں کمی اور لوڈشیڈنگ کی شکایات کررہے ہیں مگر آج تک سوئی گیس کمپنی انتظامیہ کے جانب سے شہریوں کی شکایات کے ازالے کے لیے کوئی کارروائی نہیں کی گئی ہے جس کی جتنی مذمت کی جائے وہ کم ہے، اسکول و کالجز جانیوالے طالبعلم اور لوگ بغیر ناشتہ کیے گھروں سے جانے پر مجبور ہیں، صبح، دوپہر اور رات کے اوقات میں اکثر و بیشتر گیس غائب رہتی ہے جس کی وجہ سے خواتین کو کھانا پکانے میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے، گیس کی بڑھتی ہوئی لوڈشیڈنگ اور پریشر میں نمایاں کمی کی وجہ سے لوگوں نے گھروں میں مٹی کے چولہے بنالیے ہیں اور لکڑیاں جلاکر کھانا پکارہے ہیں جس کے نتیجے میں ماحولیاتی آلودگی میں بھی اضافہ ہورہا ہے۔ انہوں نے وزیر اعظم ودیگر بالا حکام سے اپیل کی کہ سوئی گیس کمپنی کی ناانصافیوں اور زیادتیوں کا نوٹس لے کر گیس کی لوڈشیڈنگ اور پریشر میں کمی کی شکایات کا فوری طور پر ازالہ کیا جائے بصورت دیگر احتجاج کا راستہ اختیار کرنے پر مجبور ہوجائیں گے ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ