پودینہ

130

صبا شفیق
پودینہ قدرت کی بہت سی خصوصیات سے مالا مال ہے ۔ قدیم طبیبوں نے پودینہ پر بہت سی تحقیقات کی ہیں ، اور اس کے غذائی اور دوائی فوائد کی نشاندہی کی ہے ۔ پودینے سے طب کے کئی مرکبات تیار کیے جاتے ہیں ۔ پودینہ نظام ہضم سے متعلقہ امراض میں نہایت مفید ہے ۔ غذا کو ہضم کرتا ہے ، ریاح کو خارج کرتا ہے ۔ بھوک لگاتا ہے ۔ پیٹ پھولنا ، درد ہونا ، کھٹی ڈکاریں آنا، جی متلانا اور قے میں مفید ہے خصوصاً متلی کی صورت میں پودینے کے پتے چھ گرام ، انار دانہ ایک تولہ ، دس تولہ پانی میں جوش دے کر مریض کو پلانے سے فوری فائدہ ہوتا ہے ۔ پیچش لگنے کی صورت میں ایک تولہ پودینے کو 5 عدد بڑی الائچی کے ساتھ پکا کر بطور چائے پلانے سے مرض دور ہو جاتا ہے ۔ پودینہ الرجی(زود حساسیت) میں بھی بہت موثر تدبیر ہے خارش اور جسم پر نمو دار ہونے والے سرخ دھبے(دھپڑ) جو الرجی کی وجہ سے بنتے ہیں پودینے کا استعمال ان سے نجات دلاتا ہے ۔ یہ خون سے فاسد مواد خارج کرتا ہے ۔ اس لیے جگر کی کمزوری اور خصوصاً یرقان میں بھی اس کا استعمال کروایا جاتا ہے ۔ یہ بلغم کو پتلا کرتا ہے ۔ کھانسی ، دمہ اور درد سینہ میں مفید ہے ۔ پودینے کی چائے سانس کی نالی کی سوجن ، برو نکائٹس اور نزلہ زُکام میں انتہائی مفید ہے ۔ اس کے استعمال سے سانس کی نا خوشگوار بو سے بھی نجات ملتی ہے۔ پودینہ کو انجیر کے ساتھ بطور جوشاندہ استعمال کرنے سے سینہ اور پھیپھڑوں سے غلیظ مواد آسانی سے خارج ہو جاتا ہے ۔ دانت کے درد میں پودینے چبانا بے حد مفید ہے ۔ پودینے کو خشک کر کے جلانے اور اس کی راکھ کو نمک میں ملا کر منجن کی صورت میں مسوڑھوں پر ملنے سے مسوڑھے مضبوط ہوتے ہیں ۔ پودینہ میں تریاق کی خصوصیات بھی پائی جاتی ہیں ۔ خصوصاً بچھو ، بھڑ اور چوہے وغیرہ کے کاٹنے کی صورت میں پودینہ پیس کر لیپ کیا جاتا ہے ۔ ہرے پودینے کا پانی نکال کر حسب ضرورت ، ناک ، کان اور دوسرے اعضاء کے زخموں پر ٹپکانے کے لیے تازہ پودینہ پیس کر لیپ کرنے سے ان سے نجات ملتی ہے یہ جلد کو فرحت اور تازکی بخشتا ہے ۔پودینے کے پتوں کو جوش دے کر پانی چھان کر اگر محفوظ کر لیا جائے اور دو ہفتے تک روزانہ نہار منہ ایک کپ پیا جائے تو رنگت نکھر آتی ہے ۔ اس کے علاوہ یہ پانی بڑھا ہوا پیٹ اور وزن کم کرنے میں بھی موثر ہے ۔ گرمیوں میں اکثر جسم پر ( پِت) گرمی دانے نکل آتے ہیں ایسی صورت میں پودینے کے پتوں کا عرق10 گرام اور50 ملی لیٹر عرق گلاب ملا کر پینے سے پت( شری) بالکل ٹھیک ہو جاتی ہے ۔
پودینے کا شربت نہایت خوش ذائقہ اور فرحت بخش ہوتا ہے اس کے لیے ایک کپ شکر میں لیموں کا رس اور پودینے کی پتیاں ایک گڈی پیس کر ڈالیں اس مرکب کو دو گھنٹے کے لیے رکھ دیں ۔ پھر جگ میں برف اور ٹھنڈا پانی ڈال کر اس شربت کو ڈالیں اور نوش کریں یہ شربت دل و دماغ کے لیے انتہائی مفید ہے اور تھکن اور گرمی سے بھی نجات دیتا ہے ۔ گو پودینہ سارا سال دستیاب ہوتا ہے مگر موسم گرما میں اس کی افادیت اور استعمال اس کی کاشت کو بڑھا دیتی ہے ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ