عید کے بعد دھاندلی کیخلاف فیصلہ کن جنگ لڑیں گے ،فضل الرحمن 

69

سکھر (آن لائن) جے یو آئی کے سربراہ اور متحدہ مجلس عمل کے صدر مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ 25 جولائی کو ملکی تاریخ کی بدترین دھاندلی کر کے عوام کے مینڈیٹ پر ڈاکا ڈالا گیا، اور ایک پارٹی کو جعلی مینڈیٹ دیکر عوام کے اعتماد کو مجروح کیا گیا ہے، جسے کسی قیمت پر قبول نہیں کرینگے، عید کے بعد دھاندلیوں ے خلاف فیصلہ کن جنگ لڑینگے، سکھر میں جے یو آئی کے ایڈیشنل انفارمیشن سیکرٹری مولانا عبدالحق مہر کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان کے مطابق قائد جمعیت مولانا فضل الرحمن نے قائد سندھ علامہ راشد محمود سومرو، مفتی سعود افضل ہالیجوی، مولانا عبیداللہ بھٹو سے ٹیلیفونک گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عوام کے مینڈیٹ پر ڈاکا ڈالنے والوں سے سمجھوتا نہیں کیا جاسکتا، جمہوریت دشمنوں کا تعاقب کرینگے اور پوری دنیا کے سامنے ان کو بے نقاب کرینگے، انہوں نے کہا کہ ملکی تاریخ کا سیاہ باب ہے کہ ایک جعلی لیڈر کو جعلی مینڈیٹ کے ذریعے وزیر اعظم بنایا جا رہا ہے، مگر قوم ان کو قبول نہیں کریگی، مولانا فضل الرحمن کا مزید کہنا تھا کہ 14 اگست تحریک آزادی کے نامکمل ایجنڈے کو مکمل کرنے لاالہ الا اللہ کا نظام نافذ کرنے کے عہد کا دن ہے، آج استعماری قوتوں نے ملک کا اسلامی تشخص ختم کرنے کے لیے یلغار کردی ہے، ہم ان کے عزائم کو ناکام بنانے کے لیے ازسر نو جنگ اور جدوجہد شروع کرنے کا اعلان کرتے ہیں، جعلی مینڈیٹ کے ذریعے نام نہاد تبدیلی اور مغربی تہذیب و ایجنڈے کی تسلط کی سازش کو کامیاب ہونے نہیں دینگے، مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ عمران خان کی تبدیلی کا بھانڈا بیچ چوراہے پھٹ چکا ہے، انہوں نے جن پر کرپشن اور دہشتگردی کے الزامات لگائے آج اقتدار کے لیے ان سے اتحاد اور مفاہمت کرچکے ہیں، انہوں نے کہا کہ یہ حکمراں طاقتوں کی ناکامی کا اعتراف ہے کہ ہم پر کرپشن کے بجائے بغاوت کے مقدمے بنانے کی دھمکیاں دی جا رہی ہیں، مگر ہم اس سے ڈرنے والے نہیں، انہوں نے کہا کہ حکمرانوں میں جرأت ہے تو وہ انتقامی کارروائیوں اور میڈیا کے ذریعے منفی پروپیگنڈا کرنے کے بجائے سیاسی میدان میں اور دلائل کے سے ان کا مقابلہ کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ