شا نگلہ ، ضلع بھر میں بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ جاری ،عوام سراپا احتجاج

22

ا لپوری( آ ئی این پی)شا نگلہ سمیت ضلع بھر میں بجلی کی غیر اعلانیہ اورناروا لوڈ شیڈنگ جاری،اب پورا پوار دن بجلی بندش کا سلسلہ جاری ،محکمہ واپڈا میں اسٹاف کی کمی کے خلاف عوام سراپا احتجاج بن گئی ، گرڈا سٹیشن کے اہلکاروں کا قبلہ درست کیا جائے ۔شانگلہ میں لوڈشیڈنگ کا سلسلہ بدستور جاری، گزشتہ دن بجلی بند رہتی ہے ۔کاروبار ٹھپ ہوکر رہ گئے اورمقامی لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا،اسپتالوں میں مریضوں کے حالت خراب،شانگلہ کے منتخب نمائندے خاموش تما شائی بنے ہیں۔ عوامی حلقوں کا شدید رد عمل ،ناروا لوڈ شیڈنگ کے بعد مسلسل بجلی بندش کو فوری طور ختم کیا جائے، عوامی حلقوں کا مطا لبہ۔ بجلی کریک ڈ اؤن تاجروں کی احتجاج کی دھمکی۔ شانگلہ میں غیر اعلانیہ کئی گھنٹے لوڈ زشیڈنگ کے بعد اب پورے پورے دن بجلی بندہونے سے عوام کا جینا دوبھر کر دیا ہے، گرڈاسٹیشن کوٹکے عوام کیلیے عذاب بن گیا ہے۔ بجلی کی طویل کریک ڈاؤن سے کاروباری زندگی ٹھپ ہوکر رہ گئی ہے ، دوسری جانب اسٹاف کی کمی کی وجہ سے مسلسل اووربلنگ کا سلسلہ بھی جاری ہے، غریب عوام بل جمع کرنے سے قاصر، شانگلہ میں کوئی انڈسٹری یا کوئی فیکٹری موجود نہیں تاہم غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ یہاں کے عوام کے ساتھ سراسر زیادتی اور منتخب نمائندوں کی نااہلی کے مترادف ہے،دوسری جانب شانگلہ میں مسلسل لوڈ شیڈنگ سے اسپتالوں میں مریض کو بھی سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، عوامی حلقوں اور تاجروں نے احتجاج کی دھمکی دیتے ہوئے پیسکو خیبر پختونخوا کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ شانگلہ میں جاری ناروا لوڈ شیڈنگ ،اووربلنگ کا سلسلہ ختم کرنے میں اپنا کردار ادا کریں،شا نگلہ میں محکمہ واپڈا میں اسٹاف کی کمی کو پورا کرنے کیلیے ٹھوس اقدامات اٹھائیں ۔ شانگلہ ضلع بھرمیں بجلی کی ناروالوڈ شیڈنگ نے عوام کے ناک میں دم کردیا ،ہر ایک گھنٹے کے بعدتین تین گھنٹے بجلی بند۔ بجلی کے طویل بریک ڈاؤن نے کاروبار سمیت سرکاری نظام سمیت ٹھپ ہوکر رہ گیا ۔ اسپتالوں میں مریضوں کو بھی شدید مشکلات۔ سرکاری و نجی اسپتالوں میں ایکسرے مشینزاور لیبارٹریز بند ۔ شانگلہ کے بیشتر گرم علاقوں میں پانی کی قلت شروع ہوگئی ۔ بجلی سے چلنے والے چھوٹے کاروبار مکمل طور پر بند رہے ۔ ایک ہفتہ سے جاری بریک ڈاؤن کے خلاف عوام سراپا احتجاج بن گئے ۔ تاجر تنظیموں نے بھی احتجاج کی دھمکی دی ہے ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.