پی آئی اے پنشنرز کو بھی انصاف دیا جائے

189

شیخ
مجید
جہاں بینکوں اور حکومتی پنشنروں کے معاملات حل کیے گئے ہیں وہیں PIA کے نحف اور مجبور پنشنرز بھی یہ سمجھ رہے تھے کہ ان کو بھی اس کے ثمرات مل جائیں گے کہ بنیادی نکتہ حقدار کو اس کا حق ملنا ہے۔ مگر باوجود کوششوں اور یاددہائیوں کے PIA انتظامیہ سالہا سال سے ٹال مٹول سے کام لے رہی ہے۔ 2010ء سے 2018ء تک صرف ایک بار 2013ء میں PIA میں پنشن میں اضافہ کیا گیا جب کہ حکومتی پنشنرز کی پنشن میں مہنگائی سے کسی حد تک نمٹنے کے لیے ہر سال اضافہ کیا جاتا ہے، خود PIA نے 2003ء میں یہ اصول طے کیا کہ جب بھی PIA میں تنخواہ میں اضافہ ہوگا۔ پنشن بھی بڑھائی جائے گی (حوالہ سرکلر نمبر 21/2003 مورخہ 31 جولائی 2003) اس پر بھی عمل نہیں کیا گیا۔ کیا ڈیڑھ دو ہزار یا 3/4 ہزار ماہانہ پنشن اس دور میں کمزوروں کا منہ چڑانے کے مترادف نہیں ہے؟۔ بڑے لوگ اپنے مفادات کا تحفظ باآسانی کرلیتے ہیں۔ حقیقت کے برعکس کہا جاتا ہے کہ PIA کے مالی حالات درست نہیں ہیں جبکہ PIA میں پنشن فنڈ الگ سے قائم ہے اور ٹرسٹ بنا ہوا ہے جس میں اربوں روپے موجود ہیں جو PIA پنشنرز کا اثاثہ ہیں۔ PIA میں پنشن 197ء سے لاگو کی گئی، ایک پنشن فنڈ ٹرسٹ قائم کیا گیا پنشن رولز متعارف کرائے گئے، فارمولا بنا مگر وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ FBR کی منظوری کے بغیر اس میں ترامیم کی جاتی رہیں اور پنشنرز کی حق تلفی ہوتی رہی۔ پنشن کی بے توقیری اس ایک بات سے مجھ میں آجاتی ہے کہ ایک سابق ایم ڈی کی پنشن ساڑھے 3 ہزار روپے ایک دوسرے ایم ڈی، چیئرمین کی پنشن ساڑھے 9 ہزار روپے ماہانہ ہے۔ نچلے درجے کے پنشنرز کو کیا ملتا ہوگا آپ خود اندازہ لگا سکتے ہیں جو پنشن فنڈ ٹرسٹ ہے اس میں ریٹائرڈ ملازمین کی نمائندگی نہیں ہے۔ پنشن فنڈ کا الگ سے آڈٹ نہیں کرایا جاتا نہ حساب دیا جاتا ہے۔ معلومات فراہم نہیں کی جاتیں۔ اسی طرح کمیوٹڈ پنشن کی رقم 10 سال بعد یعنی 70 سال کی عمر کو پہنچنے پر قاعدے کے مطابق ایک پیسہ بھی واپس نہیں کی جاتی۔PIAپنشنرز کی پنشن میں یکم اکتوبر 2015ء سے مطالبات (جب سے تنخواہیں بڑھائی گئی ہیں) معقول اضافہ کیا جائے (یا تنخواہوں میں اضافے کی شرح کے مطابق)کمیوٹ کی گئی پنشن 70 سال کی عمر پہنچنے پر واپس کی جائے۔ پنشن میں اضافہ حکومتی اضافے سے منسلک کردیا جائے۔
کم از کم پنشن دس ہزار روپیہ ماہانہ مقرر کی جائے اور جن کی عمریں 78 سال یا اس سے زیادہ ہیں ان کو پندرہ ہزار ماہانہ پنشن دی جائے وفاقی حکومت کے فیصلے کے مطابق اسی تناسب سے بیوہ گان کی پنشن بھی بڑھائی جائے۔ پنشن فنڈ ٹرسٹ میں پیارے (PIA ریٹائرڈ ایمپلائز) کے نمائندگان کو موثر نمائندگی دی جائے۔ پنشن ہر ماہ کی دس تاریخ تک پنشنرز کو پہنچائی جائے، تاخیر سے گریز کریں۔ اُمید کی جاتی ہے کہ PIA کے مظلوم اور بے یارومددگار پنشنرز کی داد و فریاد اور معقول مطالبات پر جلد ہمدردانہ اور انصاف کے تقاضوں کے مطابق غور فرما کر حل فرمائیں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ