اشتعال انگیز تقریر ،خالد مقبول ،نسرین جلیل،خوش بخت،حیدر عباس اشتہاری قرار 

75

کراچی (اسٹاف رپورٹر) انسداد دہشت گردی کی عدالت میں اشتعال انگیز تقریر اور میڈیا ہاؤسز پر حملوں سے متعلق مقدمات کی سماعت ہوئی‘ عدالت نے بانی ایم کیو ایم اور خالد مقبول سمیت دیگر کے وارنٹ گرفتاری جاری کردیے جبکہ خالد مقبول، حیدر عباس رضوی، خوش بخت شجاعت کو اشتہاری قرار دے دیا۔ عدالت نے آئندہ سماعت پر ملزمان کوگرفتار کرکے پیش کرنے کا حکم دیا۔ عدالت میں اشتعال انگیز تقریر کے27 مقدمات کی سماعت ہوئی‘ ایم کیو ایم رہنما فاروق ستار، عامر خان، کنور نوید جمیل، قمر منصور ودیگر عدالت میں پیش ہوئے‘ پولیس نے3 مقدمات کا حتمی چالان عدالت میں پیش کردیا‘ پولیس نے چالان میں
بانی ایم کیو ایم الطاف حسین، ایم کیو ایم پاکستان کنوینئر خالد مقبول صدیقی کو مفرور قرار دے دیا‘ عدالت نے چالان منظور کرتے ہوئے بانی ایم کیو ایم الطاف حسین، ایم کیو ایم پاکستان کنویئنر خالد مقبول صدیقی سمیت دیگر رہنماؤں کے وارنٹ گرفتاری جاری کرتے ہوئے سماعت8 ستمبر تک ملتوی کردی ۔ جبکہ میڈیا ہاؤسز پر حملے کے 5 مقدمات کی سماعت کے موقع پر ایک ملزم فیصل کی عدم حاضری کے باعث فرد جرم عاید نہ کی جاسکی۔ عدالت کا کہنا تھا کہ2 سال ہوگئے‘ اب تک فرد جرم نہیں ہوسکی‘ آئندہ سماعت پر تمام ملزمان پیش ہوں ورنہ پیش نہ ہونے والے کے خلاف وارنٹ گرفتاری جاری کیے جائیں گے۔ عدالت نے حکم دیتے ہوئے کہاکہ آئندہ سماعت پر فرد جرم عاید کی جائے گی‘ ملزمان کو گرفتار کر کے پیش کیا جائے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ