چیئر مین نیب نے پاکستان اسٹیل کے خسارے کی رپورٹ طلب کرلی

42

اسلام آباد (اے پی پی) چیئرمین نیب نے پاکستان اسٹیل میں اربوں روپے کے خسارے کی رپورٹ طلب کرلی ہے۔ پاکستان اسٹیل ملز کے خلاف سازش کی نشاندہی اور حکومتی غفلت کے معاملے کی وجو ہات کی تحقیقات کا حکم دیدیا گیا ہے۔ قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے صنعت و پیداوار نے پاکستان اسٹیل کے مسئلے کا نوٹس لیا ہے اور نیب سے کارروائی کی سفارش کی ہے۔ترجمان نیب کے مطابق قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس (ر)جاوید اقبال نے کہا ہے کہ جعلی ہاؤسنگ سوسائٹیوں، کو آپریٹو ہاؤسنگ سوسائٹیوں، مضاربہ، شارقہ بینک فراڈ اسکینڈلز کے ذریعے لوٹی دولت واپس لانا نیب کی اولین ترجیحات میں شامل ہے۔ چیئر مین نیب نے 315 ملزمان کی گرفتاری کے علاوہ 247 افراد کے خلاف بدعنوانی کے ریفرنس دائر کیے۔ سی ڈی اے، آر ڈی اے، آئی سی ٹی، ایل ڈی اے، پی ٹی اے، کیو ڈی اے اور کے ڈی اے کا اجلاس بلانے کے خواہاں ہیں تاکہ جعلی ہاؤسنگ سوسائٹیوں کے خلاف مشترکہ حکمت عملی اختیار کر کے عوام کی محنت سے کمایا ہوا پیسہ واپس کیا جا سکے۔ جسٹس (ر)جاوید اقبال نے پاناما اور برطانوی ورجن جزائر میں آف شور کمپنیاں رکھنے والے 435 پاکستانیوں کے خلاف جاری تحقیقات پر نیب سے پیش رپورٹطلب کر لی ہے۔ سرکاری شعبے ، صوبائی اور وفاقی محکموں کو بھی نوٹس جاری کیے ہیں جو 50 ملین روپے یا اس سے زائد کے ٹھیکوں کی نقول قانون کے مطابق اسکروٹنی جائزے کے لیے نیب کو جمع نہیں کرا رہے۔ تاکہ نیب آرڈیننس 1999ء کے مطابق منصوبوں کے اجرا میں شفافیت لائی جا سکے۔ چیئرمین نیب نے اسٹیٹ لائف انشورنس کمپنی آف پاکستان کی اسلام آباد میں 22 منزلہ اسٹیٹ لائف ٹاور کی عمارت کی تعمیر میں 22 سال سے تاخیر اورمبینہ بدعنوانی کی رپورٹ طلب کر لی ہے۔22 برس میں صرف 19 منزلیں مکمل ہوسکی ہیں ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.