امریکہ کا حکم ماننے سے آئی ایم ایف کی ساکھ متاثر ہو گی۔سابق فوجی

150

سابق فوجیوں کی تنظیم ویٹرنز آف پاکستان (سابقہ پیسا)نے کہا ہے کہ امریکہ کی جانب سے آئی ایم ایف پر پاکستان کو قرضہ نہ دینے کیلئے دباؤ ملک کوسنگین اقتصادی مسائل میں دھکیلنے کی ساز ش ہے جودہشت گردی کے خلاف جنگ میں بھاری جانی و مالی نقصان اٹھانے والے ملک پاکستان سے دشمنی کے مترادف ہے۔

پاکستان کو دیوار سے لگانے کی کوششوں سے پاکستان اور امریکی کے مابین بداعتمادی بڑھے گی۔امریکہ کا حکم ماننے سے آئی ایم ایف کی ساکھ مزید متاثر ہو گی جسے امریکہ پہلے ہی سیاست زدہ ادارہ بنا چکا ہے۔ پاکستان ایک آزاد اور خود مختار ملک ہے اورامریکہ کو جان لینا چائیے کہ اب ڈکٹیشن لینے یا دباؤ پر پالیسیان بدلنے کا دور گزر گیا ہے۔ ہم امریکی مدد کے بغیر بھی زندہ رہ سکتے ہیں۔ امریکہ جیسے دوستوں کی موجودگی میں پاکستان کو کسی دشمن کی ضرورت نہیں ہے۔

zz8TBFVv پاکستان اور چین کی دوستی ہر آزامائش میں کامیاب ہوئی ہے جس میں دراڈ ڈالنے کی ہرکوشش ناکام ہو گی۔چین سے تعلقات پر کوئی سودے بازی ناممکن ہے۔آئی ایم ایف پر امریکی دباؤ پاکستان میں نئی حکومت کیلئے ایک بین الاقوامی محازپر ایک کڑا امتحان ثابت ہو گا جس سے بہتر انداز میں عہدہ براہ ہونے کی ضرورت ہے۔ماضی کی حکومتوں نے سیاسی مقادات کیلئے اصلاحات نہیں کیں۔اگر اب بھی اصلاحات نہ کی گئیں تو چند سال بعد دوبارہ قرضہ کی ضرورت پڑ جائے گی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ
mm
قاضی جاوید سینئر کامرس ریپورٹر اور کامرس تجزیہ، تفتیشی، اور تجارتی و صنعتی،معاشی تبصرہ نگار کی حیثیت سے کام کرنے کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں ۔جسارت کے علاوہ نوائے وقت میں ایوان وقت ،اور ایوان کامرس بھی کرتے رہے ہیں ۔ تکبیر،چینل5اور جرءات کراچی میں بھی کامرس رپورٹر اور ریڈیو پاکستان کراچی سے بھی تجارتی،صنعتی اور معاشی تجزیہ کر تے ہیں qazijavaid61@gmail.com