ایران میں حکومت گرانا نہیں چاہتے‘ امریکا کی پھر وضاحت

109
واشنگٹن: امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس پینٹاگون میں صحافیوں سے گفتگو کررہے ہیں
واشنگٹن: امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس پینٹاگون میں صحافیوں سے گفتگو کررہے ہیں

واشنگٹن (انٹرنیشنل ڈیسک) امریکا کا کہنا ہے کہ ایران میں حکومت کو گرانے یا تبدیل کرنے کی باتیں قیاس آرائیوں پر مشتمل ہیں۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس نے صحافیوں سے بات چیت کے دوران واضح کیا کہ امریکا ایران میں حکومت تبدیل کرنا یا گرانا نہیں چاہتا۔ البتہ امریکا کی ترجیح ایران کا مشرق وسطیٰ کے لیے منفی رویہ تبدیل کرانا ضرور ہے جس کے لیے اپنی کاوشیں جاری رکھیں گے۔امریکی وزیردفاع جیمز میٹس نے مزید کہا کہ ایران کی جانب سے دہشت گردوں کی مدد کرنے کے شواہد موجود ہیں۔ خطے میں قیام امن کے لیے اب ضروری ہو گیا ہے کہ ایران خطے میں اپنی فوج، خفیہ اداروں اور پراکسی کا استعمال بند کرے۔ دوسری جانب امریکی وزارت خارجہ نے ایرانی انقلابی عدالتوں کی جانب سے درجنوں ایرانی طلبہ کے خلاف طویل قید کے فیصلوں کی مذمت کی ہے۔ مذکورہ طلبہ پر دسمبر اور جنوری میں ہونے والے ان پُر امن احتجاجی مظاہروں میں شرکت کا الزام تھا، جن کو ایرانی حکومت نے طاقت کے زور پر کچل دیا۔ امریکی وزارت خارجہ کی ترجمان ہیزر نوئرٹ نے جمعہ کی شام اپنی ٹوئٹ میں کہا کہ پرُامن مظاہرے کے دوران اپنی رائے کے اظہار کے باعث طلبہ کی سرزنش نہیں کی جانی چاہیے۔ یہ عالمی انسانی حقوق ہیں اور ایران کو ان کے احترام کی پاسداری کرنا چاہیے۔ پیر کے روز ایران کی 68 طلبہ انجمنوں نے ملک کی مختلف جامعات سے تعلق رکھنے والے درجنوں گرفتار طلبہ کے خلاف جیل کے احکامات کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا اور ان طلبہ کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا۔ ایرانی پارلیمان کی خاتون رکن پروانہ سلحشوری کا کہنا ہے کہ تقریباً 150 زیر حراست طلبہ کے خلاف جیل کے احکامات جاری ہوئے۔ ایران کے سائنس و ٹیکنالوجی کے وزیر منصور غلامی نے بتایا کہ دسمبر 2017ء میں احتجاج کے دوران حراست میں لیے گئے طلبہ میں سے 12فیصد کو چند ماہ سے لے کر کئی سال تک کی جیل کی سزا سنائی گئی ہے۔ 2 ہفتے قبل ایران کی جامعات کے 125 اساتذہ نے صدر حسن روحانی کو بھیجے گئے ایک خط میں طلبہ کی حراست جاری رہنے اور حالیہ چند ماہ کے دوران ان کے خلاف جاری احکامات پر احتجاج کیا۔ اساتذہ نے روحانی سے مطالبہ کیا کہ وہ مذکورہ طلبہ کی رہائی کے لیے حرکت میں آئیں، تا کہ یہ طلبہ اپنی تعلیمی نشستوں پر واپس لوٹ سکیں۔
حکومت گرانا

Print Friendly, PDF & Email
حصہ