اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قدر میں 30 پیسے کا اضافہ

63

کراچی ( اسٹاف رپورٹر) پیر کو انٹر بینک میں روپے کے مقابلے میں ڈالر کی قدر کم ہو گئی جبکہ مقامی اوپن کرنسی مارکیٹ میں روپے کی بے قدری کا سلسلہ جاری رہا جس کی وجہ سے اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قدر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ۔ گزشتہ کچھ عرصہ سے امریکی ڈالر کے مقابلے میں روپے کی بے قدری دیکھنے میں آ رہی ہے اور امریکی ڈالر ہر روز نئی بلند ترین سطح پرپہنچ جاتاہے۔کاروباری ہفتہ کے پہلے ہی روز اوپن مارکیٹ میں امریکی ڈالر کی قدر میں 30 پیسے کا اضافہ دیکھا گیا جس کے بعد روپے کے مقابلے میں ایک امریکی ڈالر کی قدر 131 روپے کی سطح پر جا پہنچی تھی تاہم پاکستان میں کرنسی مارکیٹ کاکاروبار بند ہونے پر انٹر بینک میں 7پیسے کی کمی واقع ہوئی جس سے ڈالر کی قیمت خرید 128.50روپے سے کم ہو کر128.43 روپے اور قیمت فروخت 128.60روپے سے کم ہو کر128.53روپے ہو گئی جبکہ مقامی اوپن کرنسی مارکیٹ میں ڈالر کی قدر میں 10پیسے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس کے بعد ڈالر کی قیمت خرید 130.20روپے سے بڑھ کر130.30روپے اور قیمت فروخت 130.70روپے سے بڑھ کر130.80روپے پر جا پہنچی اسی طرح 50پیسے کے اضافے سے برطانوی پونڈ کی قیمت خرید 168روپے سے بڑھ کر 168.50 روپے اور قیمت فروخت 170.50روپے سے بڑھ کر 171 روپے ہو گئی۔
ہ 20پیسے کے اضافے سے یورو کی قیمت خرید 149.80روپے سے بڑھ کر150روپے اور قیمت فروخت152.30روپے سے بڑھ کر152.50ہو گئی ۔واضح رہے کہ امریکی ڈالر کے مقابلے میں پاکستانی کرنسی مسلسل دباؤ کا شکار ہے اور جنوری سے روپے کی قدر میں 20 فی صد تک کمی دیکھی گئی ہے جس کے ساتھ ملکی قرضوں کا بوجھ مزید بڑھ گیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ