آل کراچی ولی محمد یادگاری فٹبال ٹورنامنٹ کا شاندار فائنل معرکہ

57
آل کراچی ولی محمد یادگاری فٹبال ٹورنامنٹ فائنل جیتنے والی ٹیم آل برادرز ملیر کا مہمان خصوصی کرم اللہ وقاصی کے ہمراہ گروپ فوٹو
آل کراچی ولی محمد یادگاری فٹبال ٹورنامنٹ فائنل جیتنے والی ٹیم آل برادرز ملیر کا مہمان خصوصی کرم اللہ وقاصی کے ہمراہ گروپ فوٹو

کراچی ( اسٹاف رپورٹر)تنظیم اسپورٹس فٹبال کلب کے زیراہتمام یوسی 31کہکشاں کے تعاون سے گذری پلے گراؤنڈ میں آل کراچی ولی محمد یادگاری فٹبال ٹورنامنٹ کا شاندار فائنل معرکہ میں آل برادرز ملیر نے آذاد الیون ملیر کو 2-1سے ہراکر ٹرافی کو اپنے شو کیس کی زینت بنالیا۔گذری پلے گراؤنڈ میں آل کراچی ولی محمد یادگاری فٹبال ٹورنامنٹ کے فائنل میں دونوں ڈی ایف اے ملیر سے تعلق رکھنے والی ٹیموں آل برادر ملیر اور آذاد الیون ملیر کے مابین ٹرافی کے لئے سخت ٹاکرا ہوا۔ جس میں آل برادرز نے حریف کو2-1 قابو کرکے ٹرافی اپنے نام کی۔ فائنل کا آغاز تیز رفتاری سے ہوا۔دونوں ٹیموں کے فاروڈز نے ایک دوسرے کے گول پر تابڑتوڑ حملے کئے اور پہلے سبقت حاصل کرنے کے لئے کئی اچھی موومنٹ بنائی ، کھیل کے12 ویں منٹ میں آل برادرز کی جانب سے ایک موومنٹ پر مدثر کی ٹرائی پر آذاد الیون کے دفاعی کھلاڑی کی غلطی سے اون گول اسکور ہوا۔ اون گول کی بدولت فائنل میں1-0 کی سبقت حاصل کرنے والی آل برادرز ملیر کی ٹیم کی برتری زیادہ دیر برقرار نہیں رہ سکی۔ ایک گول کے خسارے میں جانے کے بعد آذاد الیون ملیر نے دس منٹ کے بعد کھیل کے 22 ویں منٹ میں جاوید نے گول کرکے مقابلہ ایک ایک گول سے برابر کردیا۔فائنل کے پہلے ہاف میں مقابلہ ایک ایک گول سے برابر ہونے کے بعد آل برادرز ملیر نے حریف آذاد الیون کے گول پر اپنا دباؤ بڑھایا اور ہاف ٹائم سے نو منٹ قبل اسٹرائیکر نعمان رحیم نے 36 ویں منٹ میں گول کرکے اپنی ٹیم کو فائنل میں2-1 کی برتری دلوادی۔ پہلے ہاف کے اختتام پر آل برادرز ملیر کی ٹیم 2-1سے جیت رہی تھی۔وقفے میں مہمان خصوصی کرم اللہ وقاصی چیئرمین یوسی 31کہکشاں سے دونوں ٹیموں کے کھلاڑیوں کا تعارف کرایا گیا،ان کے ساتھ سندھ فٹبال ریفریز ایسوسی ایشن کے صدر فیفا ریفری محمد اقبال جونیئر، سیکریٹری سعید خان،نیشنل بینک فٹبال ٹیم کے ہیڈ کوچ ناصر اسماعیل، ڈی ایف اے ایسٹ کے سیکریٹری کیپٹن عبید اللہ خان، اجمل خٹک، نعمان بروہی، اختر لاکھو، محمد علی جاموٹ،ایاز لاشاری ، عمران خان، رحمت بلوچ، رضا خان، محمد سلیم سماء،ایشلے جانی ڈین، اظہر محمود مفتی، ارشاد خان، شاکر بروہی، شاہ نواز شانی، وحید، شیرزادہ، آصف خان،وسیم راجہ سمیت دیگر مہمان موجود تھے۔ دوسرے ہاف میں دونوں ٹیموں نے عمدہ کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے شائقین فٹبال سے بھر ہوئے گراؤنڈ میں داد وصول کی ،جلدبازی کی وجہ سے نصف درجن گول کے مواقع ضائع کئے گئے، آذاد الیون کی ٹیم گول برابر کرنے میں کامیاب نہیں ہوسکی۔دوسرے ہاف میں کوئی بھی ٹیم گول اسکور کرنے میں کامیاب نہیں ہوسکی۔ ریفری کی اختتامی وسل پر آل برادرز ملیر نے آذاد الیون ملیر کو 2-1سے زیر کرکے ٹرافی پر اپنا قبضہ جمالیا۔فائنل کے ریفری شوکت حسین راجپوت،اسسٹنٹ ریفریز عبدالباقی،مختیار، نذر شباب،میچ کمشنر محمود علی خان مودی، حفیظ بروہی اور میڈیا کوآرڈینیٹر محمد سلیم سماء تھے۔فائنل کی تقسیم انعامات میں مہمان خصوصی کرم اللہ وقاصی نے فاتح ٹیم آل برادرز ملیر کے کپتان جنید کو ٹرافی کے ساتھ50 ہزار روپے کی انعامی رقم ،میڈل اور مکمل کٹ فراہم کی گئی۔ رنراپ ٹیم آذاد الیون ملیر کے کپتان آصف کو25 ہزار روپے ٹرافی،میڈل اور مکمل کٹ دی گئی۔ تیسری پوزیشن پر آنے والی خیبر مسلم کو ٹرافی کے ساتھ10 ہزار روپے اور چوتھی پوزیشن پر آنے والے نیشنل شاہین کو 5ہزرار روپے کی انعامی رقم دی گئی۔فیئر پلے ٹرافی گلشن سوکر کو دی گئی۔ ٹورنامنٹ کا بہترین کھلاڑی کا اعزاز آذاد الیون ملیر کے مصطفی کو قرار دیا گیا۔فائنل کا بہترین کھلاڑی آل برادرز ملیر کے ثناء اللہ کو قرار دیاگیا، ٹورنامنٹ کا بہترین گول کیپر بھی آل برادرز کے کپتان جنید کو قرار دیا گیاان پلیئرز کو انعامات دیئے گئے، مہمانوں میں روایتی سندھ تحفہ اجرک اور شلیڈز بھی دیں گئیں۔ٹورنامنٹ کے فائنل کھیلنے والی دونوں ٹیموں کو سر علی اصغر فٹبال اکیڈمی کی جانب سے مکمل فٹبال کٹ فراہم کی گئی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ