مکانات کے لیے کم لاگت قرضوں کے فروغ کی پالیسی 150 مسودے پر عوام کی آراء طلب کر لی گئیں

94

مکانات کا شعبہ بہت سے ملکوں میں معاشی نمو کے لیے انجن کا کام کرتا ہے۔

یہ شعبہ ملازمتوں کے فروغ، پیداواریت میں اضافے، معیارِ زندگی بلند کرنے اور غربت کم کرنے کے امکانات رکھتا ہے۔

پاکستان کو بھی دوسرے ترقی پذیر ملکوں کی طرح مکانات کی قلت کا سامنا ہے اور اس بنیادی ضرورت کا سب سے گہرا احساس معاشرے کے غریب اور محروم طبقوں کو ہوتا ہے جو معاشی لحاظ سے پسماندہ ہیں۔ مکانات کی فراہمی میں ایک بڑی رکاوٹ قرضے کا نہ ملنا ہے۔
اس مسئلے کے حل کے لیے بینک دولت پاکستان نے متعلقہ فریقوں کی مشاورت سے ملک میں مکانات کے لیے کم لاگت قرضوں کو فروغ دینے کی ایک پالیسی تشکیل دی ہے۔ کم لاگت ہاؤسنگ کے لیے پالیسی کی تیاری مارگیج انڈسٹری کو درپیش مسائل حل کرنے کی ایک کوشش ہے۔ یہ پالیسی بہترین عالمی روایات اور مقامی بازار کے حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے تیار کی گئی ہے۔پالیسی میں ضوابطی ترغیبات، مالی اداروں کے لیے خطرات کم کرنے کے طریقہ کار اور کم آمدنی والے قرض داروں کی مالی استطاعت کے مسئلے سے نمٹنے کے طریقہ کار پر توجہ دی گئی ہے ۔
مکانات کے لیےکم لاگت قرضوں کو فروغ دینے کی پالیسی کا مسودہعوام کی رائے جاننے کے لیے اسٹیٹ بینک کی ویب سائٹ پر جاری کر دیا گیا ہے اور اس لنک پر دستیاب ہے :
http://www.sbp.org.pk/smefd/2018/Policy-Promotion-Low-Cost-Housing-Finance.pdf
پالیسی کو حتمی شکل دینے سے پہلے پندرہ دنوں کے دوران موصول ہونے والی عوامی آراء پر غور کیا جائے گا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ
mm
قاضی جاوید سینئر کامرس ریپورٹر اور کامرس تجزیہ، تفتیشی، اور تجارتی و صنعتی،معاشی تبصرہ نگار کی حیثیت سے کام کرنے کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں ۔جسارت کے علاوہ نوائے وقت میں ایوان وقت ،اور ایوان کامرس بھی کرتے رہے ہیں ۔ تکبیر،چینل5اور جرءات کراچی میں بھی کامرس رپورٹر اور ریڈیو پاکستان کراچی سے بھی تجارتی،صنعتی اور معاشی تجزیہ کر تے ہیں qazijavaid61@gmail.com