ٹیکنالوجی کی دنیا کا ایک اور یادگار عہد اختتام پذیر

125

معروف انٹرنیٹ کمپنی یاہو کی جانب سے چیٹنگ میسنجر کو منگل (17 جولائی) سے شٹ ڈاؤن کرنے پر ٹیکنالوجی کی دنیا کا ایک یادگار عہد اختتام پذیر ہوگیا۔

17 جولائی کے بعد سے یوہو میسنجر کی سپورٹ کمپنی نے ختم کردی ہے اور اب صارفین اس میں چیٹ تک رسائی حاصل نہیں کرسکتے کیونکہ سروس کام ہی نہیں کرے گی۔

یہ تو واضح نہیں کہ یاہو نے اپنی اس میسنجر سروس کو شٹ ڈاؤن کن وجوہات کی بناء پر کیا، تاہم کمپنی کے مطابق اس کی توجہ نئے کمیونیکشن ٹولز متعارف کرانے کی جانب رہے گی۔

یاہو میسینجر‘ کو ابتدائی طور پر 9 مارچ 1998 کو متعارف کرایا گیا تھا، اس ایپلی کیشن میں گزشتہ 20 برسوں کو دوران صارفین کی توجہ حاصل کرنے کے لیے متعدد تبدیلیاں بھی کی گئیں۔

یاہو میسینجر چیٹ رومز سمیت دیگر فیچر بھی متعارف کرائے گئے، تاہم گزرتے وقت اور نئی میسیجنگ ایپلی کیشنز اور سوشل ویب سائٹس آنے کے بعد اسے سخت مشکلات درپیش تھیں۔

یاہو کی جانب سے گزشتہ ماہ اس سروس کو بند کرنے کا اعلان کیا گیا تھا جس پر 17 جولائی سے عملدرآمد شروع ہوگیا۔

یاہو نے اپنے صارفین کو ’اسکئرل‘ نامی اپنی نئی میسیجنگ ایپلی کیشن استعمال کرنے کا مشورہ دیا، جسے 17 جولائی کے بعد آن لائن کیا جائے گا۔

یاہو سے قبل ماضی کی دیگر مقبول میسیجنگ ایپلی کیشنز ’اے او ایل‘ کو 2017 جب کہ ’ایم ایس این‘ کو 2014 میں بند کیا جا چکا ہے۔

تاہم صارفین یاہو میسنجر میں موجود اپنی چیٹ ہسٹری کو نومبر 2018 تک ڈاؤن لوڈ کرسکتے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ