غزہ :4سال بعد اسرائیل کے تابڑ توڑ حملے،2شہید

112
غزہ: اسرائیلی فضائی حملے کے بعد دھواں اٹھ رہا ہے‘ چھوٹی تصاویر بم باری کا نشانہ بننے والی مسجد، زیرتعمیر عمارت اور شہید بچوں کی ہیں
غزہ: اسرائیلی فضائی حملے کے بعد دھواں اٹھ رہا ہے‘ چھوٹی تصاویر بم باری کا نشانہ بننے والی مسجد، زیرتعمیر عمارت اور شہید بچوں کی ہیں

غزہ (انٹرنیشنل ڈیسک) اسرائیل نے 2015ء کی جنگ کے بعد غزہ پر سب سے بڑی فضائی کارروائی شروع کردی ہے۔ خبررساں اداروں کے مطابق ہفتے کے روز اسرائیلی فضائیہ نے غزہ کی سرحد کے قریب شدید بمباری کی، جس کے نتیجے میں 2 نوجوان شہید اور درجنوں شہری زخمی ہوگئے۔ شہدا کی شناخت 15سالہ امیر نمرہ اور 16سالہ لؤی کحیل کے نام سے کی گئی ہے۔ اسرائیلی طیاروں نے غزہ سرحد کے قریبی علاقوں میں کئی مقامات پر بم برسائے۔ اسرائیلی فوج نے دعویٰ کیا کہ حماس کی جانب سے راکٹ فائر کیے جانے کے جواب میں حماس کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا گیا۔ صیہونی فوج نے تحریری بیان میں کہا کہ غزہ سرحد کے قریب 40 سے زائد حماس کے ٹھکانوں پر بمباری کی گئی، جب کہ 2 سرنگوں کو بھی تباہ کردیا گیا۔ جب کہ فلسطینی ذرائع ابلاغ کے مطابق اسرائیلی طیاروں نے ایک مسجد، زیرتعمیر کثیر منزلہ عمارت اور رہایشی عمارتوں کو نشانہ بنایا۔ دوسری جانب فلسطینی مزاحمت کاروں نے اسرائیلی علاقوں کی جانب 17 راکٹ داغے، جن میں 5 کو اسرائیل کے آئرن ڈوم ڈیفنس سسٹم نے فضا میں ناکارہ بنا دیا، جب کہ کئی راکٹ یہودی بستیوں کے اندر گرے۔ اسرائیلی فوج کے مطابق فلسطینیوں کی جانب سے دستی بموں کے حملے میں ایک اسرائیلی فوجی زخمی بھی ہوا۔ فلسطینی عینی شاہدین نے بتایا کہ اسرائیلی فضائی حملوں میں غزہ پٹی کے وسط میں بریج پناہ گزین کیمپ کے مشرق میں واقع قسام بریگیڈز کے ٹھکانے کو میزائلوں سے نشانہ بنایا گیا۔ قسام بریگیڈز فلسطینی تنظیم حماس کا عسکری ونگ ہے۔ اس کے علاوہ غزہ پٹی کے شمال میں بھی قسام بریگیڈز کے 2 دیگر ٹھکانوں پر کئی میزائل داغے گئے۔ عینی شاہدین نے مزید بتایا کہ اسرائیلی طیاروں نے غزہ شہر کے مشرق میں زیتون کے علاقے میں زرعی اراضی پر کئی میزائل داغے۔ اس کے علاوہ غزہ پٹی کے جنوبی شہر رفح کے مشرق میں اسرائیلی کراسنگ صوفا کے نزدیک غیر آباد زرعی اراضی کو بھی میزائل حملے کا نشانہ بنایا گیا۔ فلسطینی مزاحمت کاروں نے غزہ کے متوازی اسرائیلی قصبوں کی جانب 30 کے قریب مارٹر گولے اور کئی میزائل داغے۔ حماس کے ترجمان فوزی برہوم نے کہا کہ فلسطینی حملوں کا مقصد دشمن کو اس امر پر مجبور کرنا ہے کہ وہ جارحیت روک دے۔ ترجمان کے مطابق فلسطینی قوم کا تحفظ اور دفاع قومی تقاضہ اور تزویراتی آپشن ہے۔ اس سے قبل جمعہ کے روز غزہ پٹی اور اسرائیل کے درمیان سرحدی باڑ کے نزدیک جھڑپوں میں اسرئیلی فوج کی فائرنگ سے ایک فلسطینی لڑکا شہید اور 220 افراد زخمی ہو گئے تھے۔
غزہ/ حملے

Print Friendly, PDF & Email
حصہ