مجلس عمل کا جلسہ کل باغ جناح میں ہوگا،حافظ نعیم کی زیر صدارت اجلاس میں فیصلہ

38

کراچی (اسٹاف رپورٹر)متحدہ مجلس عمل کے تحت کل بروز اتوار 15جولائی کو عظیم الشان جلسہ اب حسن اسکوائر کے بجا ئے باغ جناح میں شام 6بجے ہو گا ۔ مختلف طبقات اور شعبہ زندگی سے وابستہ افراد اور عوام جوق در جوق باغ جناح میں پہنچیں گے اور ثابت کر دیں گے کہ کراچی مجلس عمل کا شہر ہے ۔ مستونگ و بنوں اور اس سے قبل پشاور میں دہشت گردی کے واقعات اور قیمتی انسانی جانوں کا ضیاع انتہائی افسوسناک اور قابل مذمت اور الیکشن کو سبو تاژ کر نے کی کوشش ہے ۔ ان خیالات کا اظہار ادارہ نور حق میں متحدہ مجلس عمل کراچی کے صدر حافظ نعیم الرحمن کی زیر صدارت کراچی کے ذمے داران کے ایک ہنگامی اجلاس میں کیا گیا ۔ اجلا س میں جمعیت علما اسلام کے محمد اسلم غوری ، حماد علی شاہ ، جمعیت علما پاکستان کے مستقیم نورانی ، اسلامی تحریک کے سرور علی ، جماعت اسلامی کے مسلم پرویز ، راشد قریشی اور زاہد عسکری نے شر کت کی ۔ اجلاس میں پشاور، مستونگ اور بنوں میں ہونے والی دہشت گردی کی کارروائیوں اور انسانی جانوں کے ضیاع پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کر تے ہوئے ان وارداتوں کی شدید مذمت کی گئی اس سے قبل پشاور میں ہونے والے دہشت گردی کے واقعے میں اور مستونگ و بنوں کے واقعات میں لقمہ اجل بننے والے افراد کے لیے دعائے مغفرت اور ان کے اہل خانہ کے لیے صبر جمیل اور زخمیوں کے لیے جلد از جلد صحت یابی کی دعا کی گئی ۔ اجلاس میں اس امر کا اظہار کیا گیا کہ یہ حملے اور بم دھماکے ملک کو غیر مستحکم کرنے اور بد امنی میں دھکیلنے کے لیے بیرونی اور ملک دشمن قوتوں کی سازش ہیں اورکوشش ہے کہ الیکشن کو سبو تاژ کیا جائے ۔ سیکورٹی اور قانون نافذ کر نے والے اداروں کو اپنا کردار ادا کر نا چاہیے اور اس طرح کے واقعات کی روک تھام کو یقینی بنانے کی ضرورت ہے ۔ اجلاس میں ہارون بلور، سراج رئیسانی سمیت تمام متاثرہ خاندانوں سے اظہار یکجہتی کیا گیا اور اس امر کا اظہار کیا گیا کہ ہم ان کے غم میں برابر کے شریک ہیں ۔ اجلاس میں مجلس عمل کے تحت کل بروز اتوار 15جولائی کو ہونے والے جلسے کی تیاریوں اور مختلف پہلوؤں کے حوالے سے جائزہ لیا گیا اور کہا گیا کہ مجلس عمل نے 15جولائی کے لیے باغ جناح میں ہی جلسہ کر نے کی اجازت کے لیے مقامی انتظامیہ کو درخواست دی تھی مگر انتظامیہ کی جانب سے بتایا گیا کہ کسی اور پارٹی نے بھی 15جولائی کو باغ جناح میں جلسے کی اجازت طلب کی ہے ۔ اس لیے مجلس عمل نے حسن اسکوائر پر جلسے کا اعلان کیا اورتیاریاں اور انتظامات شروع کر دیے ، جو انتہائی عروج پر پہنچ چکے ہیں ۔ تاہم اب انتظامیہ کی جانب سے باغ جناح میں جلسے کی اجازت دے دی گئی ہے اس لیے اب مجلس عمل کا عظیم الشان جلسہ 15جولائی کو حسن اسکوائر کے بجائے باغ جناح میں ہو گا ۔ اجلاس سے خطاب کر تے ہوئے حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ جلسے کے مقام کی تبدیلی سے کو ئی فرق نہیں پڑے گا اور مجلس عمل کے کارکنان ، ذمے داران اور کراچی کے عوام اپنے عزم اور حوصلے سے جلسے کو بھر پور اور کامیاب بنائیں گے اور جوق در جوق شر کت کر کے ثابت کر دیں گے کہ کراچی مجلس عمل کا شہر ہے ۔ انہوں نے متعلقہ کمیٹیوں کے ذمے داران کو ہدایت کی کہ جلد از جلد باغ جناح میں جلسے کی تیاریوں اور انتظامات کو مکمل کر کے حتمی شکل دیں ۔ انہوں نے علما ، اساتذہ ، طلبہ ، وکلا ، ڈاکٹروں ، انجینئرز، مزدوروں اور تاجروں سمیت مختلف شعبہ زندگی سے وابستہ افراد اور عوام سے اپیل کی کہ وہ کل 15جولائی کو شام 6بجے باغ جناح پہنچیں اور اپنا اور اپنے شہر کے مستقبل کو روشن اور محفوظ بنانے کے لیے مجلس عمل کا ساتھ دیں ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.