کرپشن زدہ لوگوں کو اسمبلیوں میں نہیں آنا چاہیے، افتخار چودھری

68

حیدر آباد (نمائندہ جسارت) سابق چیف جسٹس آف پاکستان اور پاکستان جسٹس اینڈ ڈیمو کریٹک پارٹی کے سربراہ جسٹس (ر) افتخار محمد چودھری نے کہا ہے کہ کرپشن زدہ لوگوں کو اسمبلیوں میں نہیں آنا چاہیے، لندن فلیٹس اسکینڈل میں نواز شریف اوران کی فیملی کیخلاف احتساب عدالت کا فیصلہ بد عنوانی کے خاتمے کے لیے بارش کا پہلا قطرہ ہے، کرپشن جس نے بھی کی اسے سزا ضرور ملنی چاہیے۔ سابقہ حکمرانوں کی کارکردگی سے عوام سخت نالاں اور ناراض ہیں۔ پاناما میں شامل 436 پاکستانیوں اور قرضے معاف کرانے والوں سے بھی لوٹی گئی دولت کی پائی پائی وصول کی جانی چاہیے، ان الفاظ کا اعادہ انہوں نے دورہ کراچی کے دوارن جمعیت علما پاکستان نیازی کے مرکزی رابطہ آفس میں JUPنیازی کے مرکزی چیف آرگنائزر سفیرامن چیئرمین ’’کاگف‘‘ پیر صاحبزادہ احمد عمران نقشبندی کی جانب سے آستانہ عالیہ ’’بھیج پیر جٹا‘‘ میں اپنے اعزاز میں دیے گئے استقبالیہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ان کے ہمراہ پارٹی کے قومی اسمبلی کے امیدوار وہاب بلوچ اور صوبائی اسمبلی کے امیدواران جبکہ ’’کاگف‘‘ کے ایڈیشنل سیکرٹری جنرل سہیل افضل جٹ، مشیر قانون احمد مہران گورایا ایڈووکیٹ، سیکرٹری اطلاعات سندھ محمد جنید احمد اور کراچی ڈویژن صدر اشفاق محمد خٹک، جنرل سیکرٹری محمد عالم اور دیگر عہدیداران بھی موجود تھے۔ اس موقع پر صاحبزادہ احمد عمران نقشبندی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قوم موجودہ بدعنوان نظام سے آزادی اور چھٹکارا چاہتی ہے۔ عوام نے بدعنوان عناصر اور حکمرانوں کیخلاف علم بغاوت بلند کردیا ہے، کرپٹ عناصر سے ایک ایک پائی کا حساب لیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ جسٹس افتخار محمد چودھری نے آمریت کیخلاف عوام کے حقوق کے لیے آواز بلند کرکے جو پودا لگایا تھا، آج اس کا پھل چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کی صورت میں عوام کو مل رہا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ