الیکشن سے پہلے سیکورٹی کی خراب صورتحال پر سینیٹ ارکان پھٹ پڑے

75

اسلام آباد (صباح نیوز) الیکشن سے پہلے سیکورٹی کی خراب صورتحال پر سینیٹ اراکین پھٹ پڑے۔ جمعہ کو ایوان بالا میں عام انتخابات کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے اپوزیشن لیڈر شیری رحمن، سینیٹر مشتاق خان، رحمن ملک، جہانزیب جمالدینی، شبلی فراز، محمد علی سیف، سینیٹر حاصل بزنجو، سعدیہ عباسی، نعمان وزیر، طاہر بزنجو اور دیگر کا کہنا تھا کہ امیدواروں کو سیکورٹی فراہم نہیں کی جارہی، یکساں ماحول اور مواقع فراہم نہ کیے گئے تو انتخابات متنازع ہوں گے،کچھ جماعتوں کا راستہ روکا جارہا ہے، نگراں حکومت شفاف انتخابات کرانے نہیں دھاندلی کرانے آئی ہے،جب پتا تھا کہ اے این پی پر حملہ ہو سکتا ہے تو کیوں سیکورٹی نہیں دی گئی۔سینیٹ میں جمعہ کو دونوں بڑی جماعتوں بشمول قوم پرستوں نے خدشہ ظاہرکردیاہے کہ انتخابات متنازع ہوگئے ہیں سب جماعتیں مل بیٹھیں اور شروع ہونے والی دھاندلی کیخلاف مشترکہ لائحہ عمل وضع کریں،اجلاس میں پیپلزپارٹی نوازشریف کی گرفتاری پر مسلم لیگ کی حمایت میں سامنے آ گئی۔مسلم لیگ کی سینیٹر سعدیہ عباسی نے عمران خان کے بیان کہ جو نوازشریف کا استقبال کرے گا وہ گدھے ہیں کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس ایوان کے 37 سینیٹر استقبال کے لیے جا رہے ہیں کیا یہ گدھے ہیں؟ جماعت اسلامی کے سینیٹر مشتاق خان نے کہا کہ الیکشن میںیکساں ماحول اورسیکورٹی نہ دی گئی تو الیکشن متنازع ہوں گے، انتخابات میں کچھ جماعتوں کو روکا اور کچھ کو راستہ دیا جا رہا ہے۔ حاصل بزنجو نے الزام لگایا کہ نگراں حکومت صاف شفاف الیکشن کروانے نہیں دھاندلی کروانے آئی ہے اور دھاندلی کی ذمے داری الیکشن کمیشن پر بھی ہے۔ پاکستان تحریک انصاف کے سینیٹرز نے کہا کہ اگر اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق اور سابق وزیراعلیٰ پنجاب انتظامیہ کو کھلی دھمکیاں دینگے تو ایسے ماحول میں وہ کس طرح کام کرینگے۔ آج کے بعد سینیٹ میں تنقید کا بھرپور جواب دیا جائے گا، باپ بیٹی مجرم، بیٹے اشتہاری، داماد قیدی، نواسہ پوتا برطانیہ میں قید، 2 مجرموں کا استقبال کرنے والوں کو خود نام دیں، آصف علی زرداری نے نیب اور عدالتوں کو دھمکی دی ہے نگران حکومت نے مسلم لیگ ن کی فیس سیونگ کے لیے کنٹینر لگائے ہیں، 2 جماعتوں کی میثاق جمہوریت نے ملک کو تباہ کیا ۔ اپوزیشن لیڈر شیری رحمن نے کہا کہ نوازلیگ سے سیاسی اختلاف ہے مگرآج سیاسی ماحول آلودہ ہو گیا ہے، ن لیگ کو اس وقت قانون اور نظریہ یاد آتا ہے جب ان پر برا وقت آتا ہے۔سینیٹر جہانزیب جمالدینی نے کہا کہ وفاق اور صوبوں میں سیکورٹی ہائی الرٹ جاری ہو چکے ہیں۔ سب کو علم ہے کہ عام انتخابات کو ملتوی کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ