یمن آپریشن میں جرائم کے مرتکب سعودی فوجیوں کی سزائیں معاف

100
جدہ: سعودی فرمانروا شاہ سلمان کابینہ کے اجلاس کی صدارت کررہے ہیں
جدہ: سعودی فرمانروا شاہ سلمان کابینہ کے اجلاس کی صدارت کررہے ہیں

جدہ ؍ صنعا (انٹرنیشنل ڈیسک) سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے ایک شاہی فرمان جاری کیا ہے جس میں یمن میں ’بحالی امید آپریشن‘ میں شامل فوجیوں سے ہونے والے جرائم پر انہیں عام معافی دینے کا اعلان کیا ہے۔ عرب ٹی وی کے مطابق شاہ سلمان نے شاہی فرمان میں کہا ہے کہ یمن میں باغیوں کے خلاف لڑنے والے افسروں اور جوانوں کی قربانیوں اور خدمات کا اعتراف کرتے ہوئے ان کی معمولی لغزشوں پر کوئی گرفت نہیں کی جائے گی۔ شاہ سلمان نے منگل کے روز کابینہ کے خصوصی اجلاس میں یمن سمیت خطے کے دیگر بحرانوں پر مشاورت بھی کی۔ دوسری جانب یمن کے عسکری ذرائع کے مطابق سرکاری فوج نے ساحلی شہر الحدیدہ میں ایران نواز حوثی باغیوں کی سپلائی لائن کاٹ دی ہے۔ عرب ٹی وی کے مطابق الحدیدہ صوبے کے شہر زبید اور التحیتہ میں باغیوں اور فوج کے درمیان لڑائی جاری ہے۔ عسکری ذرائع کا کہنا ہے کہ تحیتہ شہر پر باغیوں نے گولہ باری جاری رکھی ہوئی ہے جس کے نتیجے میں 12 شہری جاں بحق اور کئی زخمی ہو گئے۔ اُدھر یمنی وزیر خارجہ خالد الیمانی نے اپنے لبنانی ہم منصب جبران باسیل سے ایک خط کے ذریعے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ ایران نواز ملیشیاؤں کو لگام دے۔ یمنی وزیر خارجہ کا یہ موقف حوثی باغیوں کی سپورٹ کے سلسلے میں لبنانی تنظیم حزب اللہ کے بڑھتے ہوئے کردار کے پس منظر میں آیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ