پنجاب اسمبلی حکومتی اور اپوزیشن اراکین کے ہاتھ گریبان تک پہنچ گئے

37
پنجاب اسمبلی حکومتی اور اپوزیشن اراکین کے ہاتھ گریبان تک پہنچ گئے
پنجاب اسمبلی حکومتی اور اپوزیشن اراکین کے ہاتھ گریبان تک پہنچ گئے

لاہور (خبر ایجنسیاں) پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں تحریک انصاف کے رکن عارف عباسی کے متنازع الفاظ اقلیتی ایم پی ایز کو مشتعل کر گئے جس پر ارکان میں پہلے تلخ کلامی ہوئی پھر دست و گریبان ہوگئے اور ایوان اکھاڑہ بن گیا۔ اسپیکر رانا اقبال کی زیرصدارت پنجاب اسمبلی کا اجلاس جاری تھا اور ایوان میں نواز شریف کے بیانیے کا ذکر ہورہا تھا، اپوزیشن کی جانب سے کی گئی تنقید پر کچھ حکومتی ارکان نے بھرپور جواب دیے۔ اسی دوران حکومتی ارکان نے بنی گالہ سے متعلق انکشافات کیے، ایسے میں تحریک انصاف کے رکن عارف عباسی خود پر کنٹرول نہ کر سکے اور اقلیتی رکن کو مخاطب کرتے ہوئے نازیبا الفاظ استعمال کرگئے۔عارف عباسی کے بیان پر ایوان میں تلخی بڑھ گئی اور حکومتی، اپوزیشن ارکان باہم دست و گریبان ہوگئے۔ کچھ نے آستینیں چڑھائیں تو کچھ نے ایک دوسرے کو نازیبا الفاظ کہے۔ ہنگامہ آرائی میں ایوان میدان جنگ بن گیا اور اسپیکر بھی اس ساری صورت حال پر قابو پانے ناکام رہے اور ماہ رمضان میں مغلظات نہ بکنے کی اپیل کرتے رہے۔ لڑائی زیادہ بڑھی تو کچھ حکومتی و اپوزیشن ارکان تصادم روکنے کے لیے میدان میں آئے۔اپوزیشن ارکان کے سمجھانے پر عارف عباسی نے اپنے الفاظ پر معذرت کرلی لیکن اقلیتی ارکان نے ایوان سے واک آؤٹ کیا اور عارف عباسی کی معطلی کا مطالبہ کردیا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ