پولیس نے تفتیش میں ناکامی کا ملبہ لاپتا افراد کے اہلخانہ پر ڈال دیا 

75

کراچی (اسٹاف رپورٹر)سندھ ہائیکورٹ میں لاپتا افراد کی بازیابی سے متعلق درخواستوں کی سماعت،پولیس افسران نے تفتیش میں ناکامی کا ملبہ لاپتا افراد کے اہلخانہ پر ڈال دیا، سندھ ہائی کورٹ میں لاپتا افراد سے متعلق مقدمات کی سماعت ہوئی جہاں پولیس نیا بیان دیا کہ بیشتر لاپتا افراد ذاتی دشمنی کی وجہ سے غائب ہیں،لاپتا شخص سردراز خان لڑکی کو شادی کے لیے ساتھ لے کر غائب ہوگیا، وٹہ سٹہ، شادیوں ناکامی کے بعد بھی کئی افراد لاپتا ہوجاتے ہیں، ایسے گمشدہ افراد کے اہلخانہ تفتیش میں بھی تعاون نہیں کرتے، عدالت کا کہنا تھا کہ پولیس کا کام حقائق کو سامنے لانا ہے، گمشدگی کی وجہ کوئی بھی عدالت کے علم میں لانا چاہیے، درخواست گزار کا کہنا تھا کہ سردراز خان 13 اگست 2011 سے لاپتا ہے، پولیس افسران غلط بیانی کررہے ہیں، بازیاب کرانا پولیس کی ذمے داری ہے، عدالت نے دیگر لاپتا شہریوں کی بازیابی کے متعلقہ اداروں سے رپورٹس طلب کرلیں

Print Friendly, PDF & Email
حصہ