کدھر۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اجمل سراج

212

کوئی ارادہ نہ کوئی جادہ
کہاں کدھر جا رہے ہیں صاحب

اِدھر ذرا غور سے تو دیکھیں
یہ پھول مرجھا رہے ہیں صاحب