بچوں کے ساتھ زیادتی میں ملوث جرمن فوجی کو 8 برس قید

29

برلن (انٹرنیشنل ڈیسک) جرمن عدالت نے ایک فوجی کو جنسی زیادتی کے ایک مقدمے میں قصوروار قرار دیتے ہوئے 8 برس قید کی سزا سنا دی۔ اس فوجی پر ایک لڑکے کے ساتھ زیادتی کا جرم ثابت ہوا تھا۔ جرمنی میں جنسی زیادتی کے واقعے میں فوجی کے ملوث ہونے کی اطلاعات کے بعد عوامی سطح پر شدید بحث بھی چھڑ گئی تھی۔ جرمنی کے جنوب مغربی شہر فرائی برگ کی ایک عدالت نے اس فوجی کو 8 برس قید کی سزا کے ساتھ ساتھ متاثرہ بچے کو ساڑھے 12 ہزار یورو زرتلافی بھی ادا کرنے کا حکم دیا ہے۔ جرمن فوج کے اس 50 سالہ ماسٹر سارجنٹ کی جانب سے سزا سننے کے بعد عدالت سے استدعا کی گئی کہ اسے اس پروٹیکٹیو کسٹڈی میں رکھا جائے، تاہم عدالت نے اسے مسترد کرتے ہوئے مجرم کو جیل بھیجنے کا فیصلہ کیا۔ اس ملزم کو گزشتہ برس اکتوبر میں اسٹراس برگ کے قریب واقع علاقے الکرچ گرافن شٹاڈن میں جرمن اور فرانسیسی فوجی بیرکوں سے حراست میں لیا گیا تھا۔ اس ملزم نے اعتراف کیا تھا کہ اس نے ایک لڑکے کے ساتھ جنسی فعل انجام دینے کے لیے 2 مرتبہ پیسے دیے تھے۔
جرمن فوجی ؍ سزائے قید

Print Friendly, PDF & Email
حصہ