فلسطینی ابلاغ جنگ جیت گئے،اسرائیل کا اعتراف شکست

188
مراکش/ فرانس/ فلپائن/ ہانگ کانگ: مظاہرین اہل غزہ سے اظہارِ یکجہتی کررہے ہیں‘ اسرائیلی اور امریکی پرچم نذرآتش کیے جارہے ہیں 
مراکش/ فرانس/ فلپائن/ ہانگ کانگ: مظاہرین اہل غزہ سے اظہارِ یکجہتی کررہے ہیں‘ اسرائیلی اور امریکی پرچم نذرآتش کیے جارہے ہیں 

واشنگٹن/ غزہ (انٹرنیشنل ڈیسک) اسرائیلی فوج نے فلسطینیوں کی ابلاغی مہم کے آگے اپنی شکست کا اعتراف کرلیا۔ اسرائیلی اخبار ہارٹس کے مطابق صہیونی فوج کے ترجمان برائے انٹرنیشنل میڈیا لیفٹیننٹ کرنل جوناتھن کونریکس نے امریکا میں یہودی کمیونٹی کی ایک تقریب کے دوران صحافیوں سے گفتگو میں کہا کہ حماس غزہ کے حالیہ واقعات بیان کرنے اور اپنی میڈیا پریزنٹیشن کے ذریعے اسرائیل کے خلاف کاری ضرب لگانے اور کامیابی حاصل کرنے میں کامیاب رہی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ حماس نے بڑے پیمانے پر فلسطینیوں کی ہلاکتوں سے متعلق رپورٹنگ کرکے کم ہلاکتیں بتانے کی اسرائیلی کوشش ناکام بناکر دنیا کے سامنے اپنے اس موقف کو مضبوط کیا کہ اسرائیل نے بڑے پیمانے پر قتل عام کیا۔ ترجمان کا کہنا تھا کہ جس طرح عالمی ذرائع ابلاغ نے غزہ کی سرحد پر مظاہرین کے قتل کی رپورٹنگ کی ہے، اس سے دنیا کو یہ پیغام گیا ہے کہ اسرائیل بڑے پیمانے پر فلسطینیوں کو نشانے نہ بنانے کی کوشش میں ناکام رہا۔ دوسری جانب اسرائیلی فوج کے ہاتھوں غزہ میں فلسطینیوں کے قتل عام کے خلاف جمعرات کے روز بھی مراکش، فلپائن، ہانگ کانگ، ترکی اور فرانس میں احتجاجی مظاہروں کا انعقاد کیاگیا، جس میں مظاہرین نے اسرائیلی مظالم کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔ امریکا کے تیسرے بڑے شہر شکاگو میں بھی بدھ کے روز فلسطینیوں،عربوں اور تارکین وطن سمیت ہزاروں افراد نے فلسطینی شہریوں کے قتل عام اور امریکی سفارت خانے کی بیت المقدس منتقلی کے خلاف احتجاجی جلوس نکالا۔ مظاہرین نے ہاتھوں میں فلسطینی پرچم، بینرز اور کتبے اٹھا رکھے تھے، جن پر تل ابیب سے امریکی سفارت خانے کی بیت المقدس منتقلی کے خلاف شدید نعرے درج تھے۔ مظاہرین نے فلسطین کی تحریک آزادی کے حق میں شدید نعرے بازی کی اور غزہ میں نہتے فلسطینی مظاہرین کے قتل عام کے خلاف بھی آواز بلند کی۔ اس موقع پر مقررین نے امریکی سفار خانے کی بیت المقدس منتقلی اور غزہ میں فلسطینی پناہ گزین مظاہرین کے قتل عام کی مذمت کرتے ہوئے امریکی حکومت سے اسرائیل نواز پالیسی ترک کرنے کا مطالبہ کیا۔ مظاہرین نے امریکی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ اسرائیل کی مالی،مادی، معنوی اور فوجی امداد کا سلسلہ بند کرے، اورفلسطینیوں کے خلاف انتقامی پالیسی ترک کی جائے۔ مظاہرین نے شکاگو میں اسرائیلی قونصل خانے تک مارچ کیا اور قونصل خانے کے باہر بھی شدید نعرے بازی کی۔ ادھر قابض اسرائیلی فوج نے فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی اسلامی تحریک مزاحمت ’حماس‘ کے عسکری ونگ عزالدین قسام بریگیڈ کے مراکز پر وحشیانہ بمباری کی، جس کے نتیجے میں کئی املاک کونقصان پہنچا۔ اسرائیلی فوج نے جمعرات کی صبح عسقلان کے مقام پر جنگی طیاروں سے قسام بریگیڈ کے ایک مرکز پر 3 میزائل داغے، جب کہ سوڈانیہ کے مقام پربھی ایک مزاحمتی کمپاؤنڈ کو 2 میزائلوں سے نشانہ بنایا گیا۔ غزہ میں وزارت صحت کے حکام نے بتایا کہ اسرائیلی فوج نے میزائل حملوں میں ایک شہری زخمی ہوا، جسے غزہ کے انڈویشی اسپتال منتقل کردیا گیا۔ عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ اسرائیلی فوج کے میزائل حملوں کے بعد وہاں سے مشین گنوں سے شدید فائرنگ کی آوازیں بھی سنائی دی گئی ہیں۔
فلسطینی ابلاغی جنگ

Print Friendly, PDF & Email
حصہ