جرمنی نے مہاجرین کے لیے 21ارب یورو خرچ کیے

66

برلن (انٹرنیشنل ڈیسک) جرمن اخبار کی رپورٹ کے مطابق مہاجرین کے بحران سے نمٹنے کے لیے گزشتہ برس 20.8 ارب یورو کی خطیر رقم خرچ کی گئی۔ اس رقم میں سے تقریباً 66 فیصد رقم ہجرت کی وجوہات کو ختم کرنے پر خرچ کی گئی۔ جرمن اخبار ’ہانڈلز بلاٹ‘ نے وزارت خزانہ کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ اس رقم میں سے 14.5 ارب یورو ان وجوہات کا قلع قمع کرنے پر خرچ کیے گئے، جو مہاجرت کا سبب بنتی ہیں۔ اس کے علاوہ 6.6 ارب یورو تارکین وطن کے جرمنی میں سماجی انضمام اور پناہ کے عوامل پر اخراجات سمیت مقامی حکومتوں اور جرمن صوبوں کی مالی اعانت کے طور پر خرچ کیے گئے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مقامی حکومتوں اور جرمن ریاستوں کی امداد میں مزید اضافہ کیا جائے گا۔ مہاجرین کی مد میں اخراجات کے لیے بعض جرمن صوبے زیادہ امداد کا مطالبہ کرتے ہیں۔ اخبار کی رپورٹ کے مطابق یہ جرمن ریاستیں جرمن حکومت کی جانب سے تارکین وطن کی آبائی ممالک کی امداد کو غیر ضروری تصور کرتے ہیں۔ اسی لیے کچھ جرمن ریاستیں اس تناظر میں وفاق سے مزید رقوم کا مطالبہ کر رہی ہیں۔ دوسری جانب جرمن وفاقی وزیر خزانہ اولاف شلز نے ہانڈلز بلاٹ کی اس رپورٹ کے مطابق صوبوں کی جانب سے تنقید کو ناقابل فہم قرار دیا ہے۔ اس رپورٹ کے لیے مواد جرمن وزارت مالیات نے فراہم کیا ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ ماہ جرمن صوبے باویریا کی قدامت پسند جماعت سی ایس یو کے وزیر جیرڈ میولر کا مزید کہنا تھا کہ جرمنی میں موجود تارکین وطن کی دیکھ بھال پر پیسہ لگانے سے بہتر ہے کہ رضاکارانہ وطن واپسی کے منصوبے پر زیادہ رقم خرچ کی جائے۔ میولر کے مطابق یہ سرمایہ کاری زیادہ موثر ثابت ہوگی۔
جرمنی ؍ مہاجرین

Print Friendly, PDF & Email
حصہ