متحرک نوجوان ہی معاشی ترقی میں کر دار ادا کرسکتے ہیں ، گورنر

48

کراچی (اسٹاف رپورٹر) گورنرسندھ محمد زبیر نے کہا ہے کہ با صلاحیت ،محنتی اور وژنری نوجوان پاکستان کا قیمتی اثاثہ ہیں کیونکہ یہ نوجوان اپنے اور اپنے ملک کے مستقبل کو بدلنے کی بھرپور صلاحیت رکھتے ہیں ، متحرک نوجوان ہی سماجی اور معاشی ترقی میں اپنا اہم کردار ادا کرسکتے ہیں، ترقی کے اہداف کے حصول کے لیے موجودہ حکومت نوجوانوں کو تمام شعبہ ہائے زندگی میں آگے بڑھنے کے مواقع فراہم کررہی ہے، اس ضمن میں نوجوان ڈاکٹرز عارضی معذوری کے علاج اور احتیاطی تدابیرکی آگاہی کے لیے اہم خدمات انجام دے رہے ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گورنرہاؤس میں ینگ ڈاکٹرز آف فزیکل تھراپی آرگنائزیشن پاکستان کے 13رکنی وفد سے ملاقات میں کیا ۔ وفد کی سربراہی آرگنائزیشن کے چیئر مین ڈاکٹر نجیب الرحمن خٹک کررہے تھے ۔ ملاقات میں فزیو تھراپی کی اہمیت اور اس ضمن میں ڈاکٹریٹ کی تعلیم ، طبی سہولیات ، تحقیق، اسپتالوں میں صحت افزا ماحول ،دواؤں اور جدید طبی آلات کی اہمیت،فزیو تھراپی اور ڈاکٹرز کے مسائل سمیت دیگر امور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا ۔ گورنرسندھ نے مزید کہا کہ نوجوانوں کو با اختیار بنانا وقت کی اہم ضرورت ہے ،موجود ہ حکومت نوجوان مرد و خواتین کو درپیش چیلنجز کو سمجھتے ہوئے ایسی مربوط پالیسی پر عمل پیرا ہے جس میں نوجوان اپنے دیرینہ مسائل پر قابو پاسکیں۔ اس ضمن میں وزیر اعظم کی لیپ ٹاپ اسکیم ، وزیر اعظم انٹرن شپ اسکیم اور وزیر اعظم یوتھ بزنس لون اسکیم ایسے منصوبے ہیں جن کے ذریعے
نوجوانوں کو خود مختار بنایا جارہا ہے ۔ گورنرمحمد زبیر نے کہا کہ اسپتالوں میں نوجوان فزیو تھراپی ڈاکٹرز اہم قومی جذبہ سے سرشار انسانیت کی خدمت کررہے ہیں یہ نوجوان ڈاکٹر پاکستان کا سنہری مستقبل ہیں ، حکومت ینگ فزیو تھراپی ڈاکٹر ز کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرے گی تاکہ ینگ ڈاکٹر ز فعال کردار ادا کرسکیں ۔ وفد کی جانب سے پاکستان فزیو تھراپی کونسل کے بل کو منظور کرانے کی درخواست پر گورنر سندھ نے کہا کہ وہ ا س ضمن میں متعلقہ اداروں سے بات کریں گے جبکہ فزیو تھراپی ڈاکٹرز کی تعیناتی ، تقرر، تنخواہوں اور دیگر مراعات کے ضمن میں بھی متعلقہ محکموں سے رابطہ کیا جائے گا ۔ ملاقات میں ڈاکٹر نجیب الرحمن نے گورنرسندھ کو بتایا کہ فزیو تھراپی کے ینگ ڈاکٹر ز آپریشن کے بعد پیش آنے والی پیچیدگیوں کے بارے میں آگاہی اور معاشرے میں دیسی اور یونانی دواؤں کے نام پر موت بانٹنے والوں کے خلاف بھی متحر ک ہیں اس ضمن میں پاکستان فزیو تھراپی کونسل کی تشکیل او ر اس کے باقاعدہ چیک اینڈ بیلنس سے اتائیت سے نجات حاصل کی جا سکتی ہے ۔ انہوں نے اپنے مسائل سے متعلق گورنرسندھ کو تفصیلی سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ ڈاکٹرز آف فزیو تھراپی کی تعلیم مکمل کرنے والے ڈاکٹرز کوہاؤس جاب کے حصول میں شدید مشکلات پیش آتی ہیں اورجنہیں ہاؤس جاب مل جاتی ہے ان ڈاکٹرز کو معاوضہ نہیں دیا جاتا ہے ۔ ینگ ڈاکٹرز آف فزیکل تھراپی آرگنائزیشن کے عہدیداروں نے اپنے مسائل تفصیل سے سننے اور ان کے حل کے لیے گورنرسندھ کی دلچسپی کی تعریف کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ گورنرسندھ کی ذاتی دلچسپی کے باعث ان کے مسائل جلد حل ہوں گے ۔وفد میں آرگنائزیشن کے سینئر وائس چیئر مین ڈاکٹر عمر فیاض ، جنرل سیکرٹری سیف اللہ اور دیگر شامل تھے۔ علاوہ ازیں گورنرہاؤس میں معروف این جی او ہینڈ زکی بریفنگ کے دوران گورنرسندھ محمد زبیر نے کہا ہے کہ یہ بات پوری قوم کے لیے قابل فخر ہے کہ کئی عالمی امدادی ادارے سماجی شعبہ میں کام کرنے والی این جی اوز کی بھرپور مالی مدد کررہے ہیں جو کہ ان این جی اوز کی بہت بڑی کامیابی ہے۔ اس موقع پر ہینڈز کے پیٹر ن انچیف ڈاکٹر عبد الغفار بلو بھی موجود تھے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ یو ایس ایڈ ، یو کے ایڈ اور بل اینڈ میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن کامالی تعاون ہینڈز کے صحت ، تعلیم ، روزگار کی فراہمی ، انفرااسٹرکچر ، پانی اور حفظان صحت کے شعبوں میں اہم اقدامات پر اعتماد کا مظہر ہے ۔ گورنرسندھ نے کہا کہ سماجی و فلاحی ادارے حکومت کا بازو بن کر پورے ملک میں لوگوں کو بنیادی سہولیات کی فراہمی میں قابل قدر خدمات انجام دے رہے ہیں اوران کے اقدامات کے لوگوں کی زندگی پر دیرپا اثرات مرتب ہورہے ہیں ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ