جے ایس ایم یوبذریعہ کمپیوٹرامتحان لینے والی طب کی پہلی سرکاری جامعہ بن گئی

49

کراچی (اسٹاف رپورٹر) جناح سندھ میڈیکل یونیورسٹی پاکستان کی طب کی پہلی سرکاری جامعہ بن گئی ہے جس میں سمسٹر امتحان بذریعہ کمپیوٹر لیا گیا۔ ایم بی بی ایس کے پہلے سال کے 850 طلبہ نے اس امتحان میں شرکت کی ،جن کا تعلق جناح سندھ میڈیکل یونیورسٹی سے ملحقہ 6 میڈیکل کالجوں سے تھا۔ اس طریقۂ امتحان میں ہر امیدوار کی کمپیوٹر اسکرین پر علیحدہ سوال ہوتا ہے جو کمپیوٹر میں ڈالے گئے سوالوں کے بینک سے الاٹ ہوتا ہے۔ امیدواروں کے پاس سوالات پر نظر ثانی اور دوبارہ حل کرنے کی سہولت بھی موجود ہوتی ہے۔ یہ طریقۂ امتحان نقل اور رٹنے کے طریقوں کی حوصلہ شکنی میں بہت مؤثر ہے۔ جناح سندھ
میڈیکل یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر سید طارق رفیع نے بتایا کہ اگلے دو مہینے کے اندر جناح سندھ میڈیکل یونیورسٹی بی ڈی ایس اور فزیو تھراپی کے ڈپلوما امتحان بھی اسی نظام کے تحت لے گی اور جلد ہی تمام امتحانات کو اسی نظام پر منتقل کر دیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ جے ا یس ایم یو فی الوقت 166 آن لائن کورسز اپنے طلبہ و طالبات کو پیش کرتی ہے جس میں ملحقہ کالجوں کے طلبہ و طالبات بھی شامل ہیں جب کہ اب تک 110 اساتذہ کو ای لرننگ مواد تیار کرنے کی تربیت دی جا چکی ہے۔ اس سے پہلے بھی جے ایس ایم یو پاکستان کی پہلی سرکاری جامعہ تھی جس میں طلبہ اور اساتذہ کو مفت وائی فائی فراہم کیا گیا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ