نوشہرہ اور کوئٹہ میں سیکورٹی فوسز پر حملے،2 اہلکار شہید،12زخمی،جوابی کاروائی میں 5 دہشتگرد مارے گئے 

107
نوشہرہ: دہشت گردوں کے حملے میں تباہ ہونے والی فورسز کی گاڑی‘ چھوٹی تصویر میں اہلکار شواہد جمع کررہے ہیں
نوشہرہ: دہشت گردوں کے حملے میں تباہ ہونے والی فورسز کی گاڑی‘ چھوٹی تصویر میں اہلکار شواہد جمع کررہے ہیں

نوشہرہ /کوئٹہ( خبرایجنسیاں +مانیٹرنگ ڈیسک) نوشہرہ اور کوئٹہ میں سیکورٹی فورسز پر حملے کے نتیجے میں 2اہلکار شہید اور 12زخمی ہوگئے ۔ جوابی کارروائی میں 5دہشت گرد بھی مارے گئے۔ تفصیلات کے مطابق پہلا واقعہ نوشہرہ کچہری چوک ریلوے پھاٹک کے قریب پیش آیا جہاں مبینہ خودکش بمبار نے سیکورٹی فورسز کے قافلے پرحملہ کیا۔پولیس اور عسکری ذرائع کے مطابق خودکش حملے میں 2سیکورٹی اہلکار شہید جبکہ 6 سیکورٹی اہلکاروں سمیت 12افراد زخمی ہوگئے ہیں۔ واقعے میں 4 گاڑیوں کو نقصان پہنچا۔پولیس کے مطابق اس علاقے میں کپڑے کی مارکیٹ ہے جس کی وجہ سے راہ گیر 2 خواتین سمیت 6افراد بھی زخمی ہوئے۔ سیکورٹی فورسز کے مطابق ایف سی ٹل اسکوڈ کا قافلہ اکوڑہ خٹک سے کرم ایجنسی جارہا تھا کہ نوشہرہ کینٹ کچری چوک ریلوے پھاٹک کے مقام پر 16سالہ خودکش حملہ آور نے خود کو ایف سی کے قافلے میں شامل جیپ سے ٹکرا دیا جس سے زوردار دھماکا ہوا جس سے پورا علاقہ لرز اٹھا ۔خودکش حملے کی وجہ سے گاڑی میں آگ بھڑک آٹھی ۔سیکورٹی فورسز نے موقع پر پہنچ کر علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔مال روڈ اور ملحقہ راستے بند
کردیے گئے ۔سیکورٹی فورسز کے ذرائع کے مطابق خودکش حملہ آور کا چہرہ ٹانگیں اور ایک بازو قبضے میں لے کر ڈی این اے کے لیے لیبارٹری بھیج دیے گئے ہیں۔ذرائع کے مطابق حملہ آور چہرے سے افغانی ظاہر ہورہا ہے۔واقعے کی اطلاع ملتے ہی اسٹیشن کمانڈر اور آرمڈ کور کے میجر جنرل بھی موقع پر پہنچ گئے۔عسکری ذرائع تصدیق کررہے ہیں کہ خودکش حملہ آور کچری کی جانب سے پیدل چل کر ایف سی کے قافلے کے قریب آیا ۔ذرائع کے مطابق شہید اہلکاروں کا تعلق ایف سی ٹل اسکواڈ سے ہے۔دوسری جانب کوئٹہ کی چمن ہاؤسنگ اسکیم کے قریب ایف سی مددگار سینٹر پر دہشت گردوں نے دھاوا بول دیا۔جس کے بعد یکے بعد دیگرے 3 دھماکے سنے گئے اور شدید فائرنگ کا تبادلہ ہوا۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق سیکورٹی فورسز نے کوئٹہ میں ایف سی مددگارسینٹر پر دہشت گرد حملے کی کوشش ناکام بنا دی، دھماکا خیز مواد اور گولہ بارود سے لدی گاڑی نے مددگارسینٹر میں داخل ہونے کی کوشش کی، واقعہگزشتہ رات کلی الماس میں اہم دہشت گردوں کی ہلاکت کا ردعمل تھا تاہم چوکس ایف سی سپاہیوں نے دہشت گردوں پر فائر کھول دیا اور انہیں داخل نہیں ہونے دیا۔ترجمان پاک فوج کا کہنا تھا کہ ایف سی اہلکاروں کی فائرنگ سے تمام 5دہشت گرد مارے گئے، دہشت گرد بظاہر افغانی لگتے ہیں اور فائرنگ کے تبادلے میں 4 ایف سی اہلکار زخمی ہوئے سیکورٹی فورسز نے علاقے کو کلیئر کرادیا۔دوسری جانب وزیرداخلہ بلوچستان میر سرفراز بگٹی بھی ایف سی مددگارسینٹر پہنچے۔ ان کا کہنا تھا کہ حملے میں ملوث دہشت گردوں کو مار دیا گیا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں