گوادر ، پانی کی قلت کیخلاف شٹر ڈاؤن ہڑتال ۔بازار ، مارکیٹیں اور بینک بند

105

گوادر (نمائندہ جسارت) پانی کی قلت کے خلاف آل پارٹیز کی اپیل پر شٹر ڈاؤن ہڑتال۔ بازار،مارکیٹیں اور بینک بند،احتجاجی ریلی و مظاہرہ۔ پانی کا مسئلہ حل نہیں کیا گیا تو ایکسپریس وے بننے دیں گے نہ پورٹ کو چلنے دیں گے مقررین کا ریلی سے خطاب۔ گوادر اور گردونواح میں پانی بحران کے خلاف آل پارٹیز کے زیر اہتمام شٹر ڈاؤن ہڑتال کی گئی، ہڑتال کے باعث تمام دکانیں، مارکیٹ، بینک اور کاروباری ادارے مکمل طور پر بند رہے اور سڑکوں پر ٹریفک معمول سے کم رہا ،اس موقع پر فاضل چوک سے موٹر سائیکل احتجاجی ریلی نکالی گئی جو شہر کی سڑکو ں پر گشت کرتی ہوئی سید ہاشمی ایونیو ائر پورٹ نزد پریس کلب احتجاجی مظاہرہ کی شکل اختیار کرگئی، مظاہرین سے نیشنل پارٹی کے سینٹرل کمیٹی کے ممبرکہدہ علی، جمعیت علمائے اسلام کے ضلعی امیر مولانا عبدالحمید انقلابی، جماعت اسلامی کے تحصیل امیر سعید احمد بلوچ، بی این پی مینگل کے تحصیل صدر ماجد سہرابی، پی این پی عوامی کے رہنما جاوید دشتی، مسلم لیگ کے رہنما پرویز جمیل نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گوادر کی ترقی کے بلند وبانگ دعوے کیے جاتے ہیں لیکن حکمرانوں کے لیے شرم کی بات کہ ترقی یافتہ گوادر کے عوام شب برأت میں وضو تک کے پانی سے محروم رہے، گوادر کے نام پر ملک میں 65 ارب ڈالرز کی سرمایہ کاری سی پیک کے نام پر کی جارہی ہے لیکن گوادر کے عوام بوند بوند پانی کو ترس رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکمران سن لیں اگر عوام کو بنیادی سہولتیں مہیا نہیں کی گئیں، پانی فراہم نہیں کیا گیا، صحت اور تعلیم کے مسائل حل نہیں ہوئے تو ہم کوئی ایکسپریس وے بننے دیں گے اور نہ پورٹ کو چلنے دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ رمضان کی آمد پر دنیا کے تمام ممالک اپنے عوام کو ریلیف دیتے ہیں لیکن یہاں حکمران عوام کو سزا دیتے ہیں، پانی اور بجلی کے ادارے تباہ ہوچکے ہیں، لوگ پیاسے مر رہے ہیں حکمرانوں کے کانوں میں جوں تک نہیں رینگتی، ٹینکروں کے پیسے مہنیوں تک ریلیز نہیں کیے جاتے اور وہ ہر ماہ ہڑتال پر چلے جاتے ہیں، پورٹ اور ہاربر میں دو پلانٹ قائم ہیں ان کا پانی گوادر کے عوام کو فراہم نہیں کیا جاتا۔ مقررین نے کہا کہ ٹینکروں کے ذریعے پانی کی فراہمی مسئلے کا مستقل حل نہیں، مستقل بنیادوں پر پانی کے منصوبے مکمل کیے جائیں۔ انہوں نے عزم کا اظہار کیا کہ تما م پارٹیاں یکجا اور متحد ہیں اور پانی کے مسئلے کے حل کے لیے مشترکہ جدوجہد جاری رکھیں گے۔ علاوہ ازیں گوادر بار ایسوسی ایشن نے شہر میں پانی کی قلت کیخلاف عدالتوں کا بائیکاٹ کیا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ