قبلہ اول پر 44 یہودی آبادکاروں کی بے حرمتی

178
مقبوضہ بیت المقدس: یہودی آباد کار اسرائیلی فوجی کمانڈوز کے پہرے میں عبادت کے نام پر مسجد اقصیٰ کی بے حرمتی کے لیے داخل ہو رہے ہیں
مقبوضہ بیت المقدس: یہودی آباد کار اسرائیلی فوجی کمانڈوز کے پہرے میں عبادت کے نام پر مسجد اقصیٰ کی بے حرمتی کے لیے داخل ہو رہے ہیں

مقبوضہ بیت المقدس (انٹرنیشنل ڈیسک) فلسطین کے مقبوضہ بیت المقدس میں مسجد اقصیٰ میں یہودی آباد کاروں کے دھاوے اور مقدس مقام کی مجرمانہ بے حرمتی کا سلسلہ جاری ہے۔

بدھ کے روز اسرائیلی فوج کی فول پروف سیکورٹی میں مزید 44 یہودی آباد کارمسجد اقصیٰ میں داخل ہوئے اور قبلہ اول میں گھس کرنام نہاد مذہبی رسومات کی ادائیگی کی آڑ میں مقدس مقام کی بے حرمتی کی۔

یہودی آباد کاروں نے مسجد اقصیٰ میں گھس کر تلمودی تعلیمات کے مطابق مذہبی رسومات ادا کیں اور اشتعال انگیز حرکات کا ارتکاب کیا۔ مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق علی الصبح کئی یہودی آباد کار مراکشی دروازے کے راستے قبلہ اول میں داخل ہوئے اور حرم قدسی کی بے حرمتی کا ارتکاب کیا۔

دوسری جانب فلسطینی محکمہ اسیران کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 1967ء کی جنگ کے بعد اسرائیلی فوج نے تقریباً 15 ہزار فلسطینی خواتین کو حراست میں لیا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ صہیونی فوج کے ہاتھوں حراست میں لی گئی خواتین میں 62 اب بھی صہیونی زندانوں میں قید ہیں۔ ان میں 8 کو زخمی حالت میں حراست میں لیا گیا۔10 قیدی خواتین کی عمر 18 سال سے کم ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ