پاک فضائیہ کا 88 اسکواڈرن آگسٹا ہیلی کاپٹر سے لیس۔

279

پاک فضائیہ نے نمبر88 سرچ اینڈ ریسکیو سکواڈرن کواے ڈبلیو 139 آگسٹا ہیلی کاپٹر سے لیس کرکے ایک اہم سنگ میل عبور کرلیا۔

نمبر88 سرچ اینڈ ریسکیو سکواڈرن میں اس جدید ٹیکنالوجی کے حامل آگسٹا ہیلی کاپٹر کی شمولیت کے بعد اس کا نام تبدیل کر کے نمبر 88 کومبیٹ سپورٹ سکواڈرن اینڈ ایڈوانسڈ ہیلی کاپٹر ٹریننگ سکو ل رکھ دیا گیاہے۔

پاک فضائیہ کے تابناک ماضی کے شایان شان اس موقع کو یاد گار بنانے کے لیے ایک شاندار تقریب کا اہتمام پی اے ایف بیس شہباز (جیکب آباد) میں کیا گیا۔

تقریب کے مہمان خصوصی پاک فضائیہ کے سربراہ ائیر چیف مارشل سہیل امان تھے،جنہیں چاق و چوبند دستے نے گارڈ ا?ف آرنر پیش کیا ،اس موقع پر ایک ایم آئی 171 اور دو AW۔139 ہیلی کاپٹرز کی تھری شپ فارمیشن نے فلائی پاسٹ کا شاندار مظاہرہ بھی پیش کیا۔

ائیر چیف نے تقریب سے خطاب میں کہا کہ ہم نے دنیا میں تمام سرچ اینڈ ریسکیو پلیٹ فارمز کا باریک بینی سے جائزہ لینے کے بعد AW۔139 کا انتخاب کیاجو کہ ہماری حربی ضروریات کو بہترین انداز میں پورا کرنے کی بھرپور صلاحیت رکھتا ہے، جدید ٹیکنالوجی کے حامل ہیلی کاپٹرکی پاک فضائیہ میں شمولیت پاک فضائیہ کو جدت پسند ی کی راہ پر گامزن کرنے کے ہمارے غیر متزلزل عزم کا اعادہ ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ مجھے پختہ یقین ہے کہ پاک فضائیہ میں موجود ہ ہیلی کاپٹر وں کے بیڑے میں آگسٹا ہیلی کاپٹر کی شمولیت ایک انتہائی اہم اقدام ہے،جس سے پاک فضائیہ کی جنگی استعداد کار کو بڑھانے کے لیے آگسٹا ہیلی کاپٹر مختلف النوع حربی صلاحیتوں کا حامل ہے۔

ائیر چیف مارشل سہیل امان نے مزید کہا کہ پاک فضائیہ کے ہیلی کاپٹرز کے بیڑے کی صلاحیتوں کو اکیسویں صدی کے خطوط پر استوار کرنا ناگزیر تھا، الحمد اللہ اب پا ک فضائیہ نے نائٹ اینڈ میری ٹائم سرچ اینڈ ریسکیو صلاحیت آگسٹا ہیلی کاپٹر کے ذریعے حاصل کر لی ہے۔

ان کا کہناتھاکہ آگسٹا ہیلی کاپٹرکی شمولیت سے اس سکواڈر ن کی آپریشنل استعداد کار کو بڑھانے میں نمایاں کردار ادا کرے گی جو پہلے MI171 سے لیس تھا، پاک فضائیہ کے AW۔139 ہیلی کاپٹر کا اوائلی سکواڈرن ہونے کے ناطے یہ نئے پائلٹس کی تربیت کا کلیدی ادارہ بھی ثابت ہو گا۔

تقریب میں اعلی فوجی و سول عہدیداران نے بھی شرکت کی۔

Print Friendly, PDF & Email