قوم عدلیہ کے بعد احتساب کی طرف دیکھ رہی ہے، عمران خان

127
لاہور: چیئرمین تحریک انصاف عمران خان میڈیا سے گفتگو کررہے ہیں
لاہور: چیئرمین تحریک انصاف عمران خان میڈیا سے گفتگو کررہے ہیں

سلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ ملکی خزانہ لوٹنے والوں کا احتساب ضروری ہے، قوم عدلیہ کے بعد احتساب کے ادارے کی طرف دیکھ رہی ہے اور امید ہے نیب جلد وزیر خارجہ کے خلاف کارروائی کا آغاز کرے گا، شریف برادران عدالت عظمیٰ اور نیب کے پیچھے پڑے ہوئے ہیں لیکن پاکستان آج اداروں
کے ساتھ کھڑا ہے۔ بنی گالا میں تحریک انصاف کے رہنما عثمان ڈار نے چیئرمین عمران خان سے ملاقات کی جس میں وزیر خارجہ خواجہ آصف کے خلاف نیب کی جانب سے پی ٹی آئی کی درخواست پر پیش رفت نہ ہونے پر عمران خان نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وزیر خارجہ کے خلاف نا قابل تردید ثبوت ریکارڈ پر لا چکے ہیں تاہم منی لانڈرنگ اور کرپشن کے ثبوتوں کے باوجود نیب کی خاموشی سمجھ سے باہر ہے، نیب کو منی لانڈرنگ اور کرپشن کی تفصیلات فراہم کرنے کو تیار ہیں۔ عمران خان نے عثمان ڈار کو پی ٹی آئی وفد کے ہمراہ چیئرمین نیب جسٹس(ر) جاوید اقبال سے ملاقات کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ عثمان ڈار وزیر خارجہ اور ان کی اہلیہ کی بینکنگ ٹرانزیکشنز کے ثبوت فراہم کر سکتے ہیں۔ بعد ازاں اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو میں عمران خان نے کہا کہ شہباز شریف نے گزشتہ 9 سال میں 9 ہزار ارب روپے خرچ کیے، کک بیک لینے کیلیے میگا پر وجیکٹس پر رقم لگائی گئی۔ فیصل سبحان کا چین کی ایس ای سی پی نے نام دیا ہے، اس کا قصور تھا کہ ملتان میٹرو میں ان کی کرپشن کا بتایا۔ فیصل سبحان کو غائب کردیا گیا، ایسے کام سیاستدان نہیں مافیا کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف نے برطانیہ میں کہا تھا وہ ق لیگ کے کسی لوٹے کو نہیں لیں گے لیکن بعد میں انہوں نے اپنی پارٹی میں لوٹے بھر لیے۔ عمران خان نے کہا کہ جب تک ادارے مضبوط نہیں ہوں گے ملک آگے نہیں بڑھ سکتا۔ شریف برادران نے اپنی اشتہاری مہم پر 40 ارب روپے خرچ کردیے۔ مسلم لیگ(ن) فوج، عدالت عظمیٰ اور نیب پر حملے کر رہی ہے۔ پاکستانیوں کے 300 ارب روپے چوری ہوئے، مسلم لیگ(ن) کو نواز شریف سے 300 ارب روپے کا مطالبہ کرنا چاہیے تھا لیکن انہیں تاحیات قائد بنادیا حالانکہ جمہوری سیاسی جماعت میں تاحیات قائد نہیں ہوتے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ