عدالت عظمٰی کی خاموشی سے نواز شریف شیر ہوتا جارہا ہے،عمران خان

133
پشاور، تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان میڈیا سے بات چیت کررہے ہیں
پشاور، تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان میڈیا سے بات چیت کررہے ہیں

پشاور(صباح نیوز)پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ سینیٹ الیکشن کے لیے بولیاں چل رہی ہیں ،ایک سینیٹر کے لیے40کروڑ روپے کی آفر کی گئی ، امید ہے کے پی کے سے پی ٹی آئی کے6 امیدوار کامیاب ہو جائیں گے ،اگر پارلیمنٹ کو ملک کے سب سے بڑے مجرم نواز شریف کی چوری بچانے اور عدلیہ کو تباہ کرنے کے لیے استعمال کیا تو ہم سڑکوں پر نکلنے کے لیے مجبور ہوں گے پھر نہ کہنا عمران خان پھر سڑکوں پر آ گیا ،میں چیلنج کرتا ہوں خیبرپختونخوا کا ہیلی کاپٹر ایک منٹ بھی اپنی ذات کے لیے استعمال نہیں کیا ،سابق وزیراعظم توہین عدالت کر رہا ہے، عدالت عظمیٰ اسے کچھ نہیں کہہ رہی،وہ اس کافائدہ اٹھاتے ہوئے اور شیر ہوتا جا رہا ہے،عابد باکسر بتائیں گے کہ شہباز شریف نے ان کے ذریعے کتنے لوگ قتل کرائے تھے ،عدالت عظمیٰ میں جتنا نواز شریف کو موقع ملا کسی اور پاکستانی کو نہیں ملا۔قیوم اسٹیڈیم پشاور میں پویلین کا افتتاح کرنے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ سینیٹ انتخابات کا طریقہ کار تبدیل کرنا پڑے گا، ہم نے سینیٹ انتخابات کے لیے کے پی کے میں 6 امیدواروں کو ٹکٹ دیے ہیں،یقین ہے ہمارے لوگ نہیں بکیں گے اور امید ہے تمام ہی کامیاب بھی ہو جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ اب مجھے خدشہ ہے کہ ان کو ڈر لگا ہوا ہے کہ عدالت عظمیٰ میں فیصلہ آنے والا ہے اور ان کو یہ بھی ڈر ہے کہ نیب عدالت میں نواز شریف کے خلاف فیصلہ آنے والا ہے، نواز شریف اپنی چوری چھپانے کے لیے پارلیمنٹ کو استعمال کر رہا ہے ، 300 ارب روپے کے اس نے جواب دینے ہیں اور سوائے قطری فراڈ خط کے اس نے کوئی جواب نہیں دیا،اس کے بعد یہ کہہ رہا ہے کہ عدالت عظمیٰ کوئی سازش کر رہی ہے، نواز شریف جب توہین عدالت کر رہا ہے تو پھر بھی عدالت عظمیٰ اسے کچھ نہیں کہہ رہی اور اس کا فائدہ اٹھاتے ہوئے اور شیر ہوتا جا رہا ہے،اب پارلیمنٹ کو عدالت عظمیٰ کے خلاف استعمال کر رہا ہے، میں یہ اعلان کرنا چاہتا ہوں کہ اگر آپ ایک ریاستی ادارے کو تباہ کرنے کے لیے دوسرے ریاستی ادارے کو استعمال کریں گے تو پاکستان کے عوام سڑکوں پر نکلیں گے، اس بار میں لوگوں کو پاکستان کی عدلیہ کے لیے نکالوں گا ۔ عمران خان نے کہا کہ نیب کی جانب سے ہیلی کاپٹر کے استعمال کی تحقیقات کو بڑی خوش آئند چیز سمجھتا ہوں، یہ دیکھنا نیب کا کام ہے کہ عوام کا پیسہ غلط خرچ نہ ہو،میں چیلنج کرتا ہوں میں نے پختونخوا کا ہیلی کاپٹر ایک منٹ بھی اپنی ذات کے لیے استعمال نہیں کیا ، جب کسی منصوبے کو دیکھنے جانا ہوتا تھا تب میں ان کے ہیلی کاپٹر پر بیٹھتا تھا ، میں یہ بھی چاہوں گا کہ نیب یہ بھی پتا کرائے کہ پنجاب میں شریف خاندان پر پنجاب کے کتنے ہیلی کاپٹر استعمال ہوتے ہیں،نواز شریف جب وزیر اعظم تھا تو یہ بتایا جائے کہ کیا مریم نواز اور اس کے بچوں کے لیے ان کا جہاز ٹیکسی کی طرح نہیں استعمال کیا جاتا تھا ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ