جنوبی افریقا: نئے صدر بدعنوانی کا خاتمہ کرنے کیلیے پُرعزم

124
کیپ ٹاؤن: جنوبی افریقا کے نئے صدرسیرل رامافوساپارلیمان سے پہلا خطاب کر رہے ہیں
کیپ ٹاؤن: جنوبی افریقا کے نئے صدرسیرل رامافوساپارلیمان سے پہلا خطاب کر رہے ہیں

کیپ ٹاؤن (انٹرنیشنل ڈیسک) جنوبی افریقا کے نئے صدر سیرل رامافوسا نے کہا ہے کہ وہ ملک کو بدعنوانی سے پاک بنانے کے لیے بھرپور کوشش کریں گے۔ حکمران پارٹی زانو پی ایف سے تعلق رکھنے والے 65 سالہ سابق نائب صدر رامافوسا نے جیکب زوما کی جگہ یہ منصب سنبھالا ہے۔ اپنی ہی پارٹی کی طرف سے دباؤ کے نتیجے میں 75سالہ زوما نے بدھ کے روز صدارت کا منصب چھوڑ دیا تھا۔ سیاسی ناقدین نے رامافوسا کو صدارت کے منصب کے لیے بہترین انتخاب قرار دیا ہے۔ سابق صدر زوما حکمران پارٹی کی سربراہی سے بھی الگ ہو گئے ہیں۔ وہ 2009ء سے صدر کے عہدے پر فائز تھے۔ صدر جیکب زوما نے بدھ کی رات اپنے ایک نشریاتی خطاب میں کہا کہ وہ حکمران پارٹی افریقی نیشنل کانگریس کی سربراہی سے بھی الگ ہو رہے ہیں۔ حالیہ عرصے میں کئی بڑے اسکینڈلز کی زد میں آئے ہوئے 75 سالہ زوما پر اپنی ہی پارٹی کی طرف سے دباؤ بڑھ گیا تھا کہ وہ مستعفی ہو جائیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ پارٹی سے متفق نہیں ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ