خیرپور، واٹر کمیشن سربراہ کا فراہمی آب اسٹیشن کا دورہ

36

خیرپور (نمائندہ جسارت) چیئرمین واٹر کمیشن جسٹس ریٹائرڈ امیر ہانی مسلم نے اپنی انکوائری ٹیم کے ساتھ خاکی شاہ کے مزار سے متصل واٹر سپلائی اسٹیشن خیرپور کا دورہ کیا۔ دورے کے دوران پانی کے تالابوں میں صفائی ستھرائی نہ ہونے، خودرو پودوں کی موجودگی اور خستہ حالت پر سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے فوری طور پر صفائی ستھرائی کرانے کی ہدایت دی۔ جسٹس (ر) امیر ہانی مسلم نے ڈی سی خیرپور کی سربراہی میں انکوائری کمیٹی تشکیل دے کر واٹر سپلائی کے معاملے کی نگرانی پر مامور دونوں مجسٹریٹوں کو ہدایت کی کہ وہ شہریوں کو پینے کے صاف پانی، نکاسی آب کے نظام، تالابوں میں صفائی اور تمام امور کی نگرانی کرکے مکمل رپورٹ فراہم کریں گے۔ دورے کے موقع پر ڈی سی خیرپور جاوید علی جاگیرانی، مجسٹریٹ بہادر علی، سید انور علی شاہ، اے سی صفدر علی میرانی، چیف انجینئر پبلک ہیلتھ شمس الدین شیخ اور دیگر محکموں کے اعلیٰ افسران بڑی تعداد میں موجود تھے۔ جسٹس ریٹائرڈ امیر ہانی مسلم نے ٹی ایم او محمد علی جتوئی اور واٹر سپلائی انچارج سے پانی کی فراہمی کے نظام، ملنے والے فنڈز، محصولات، ملازمین، مشینری، پلاٹ پر کچرے کی موجودگی، نساسک کے ختم ہونے کے بعد نجی کمپنی کے قبضے اور سامان میونسپل کمیٹی کے حوالے نہ کرنے کے بارے میں باریک بینی سے معلومات حاصل کیں جہاں میونسپل افسران نے ان کو بتایا کہ نساسک کے وقت میں بننے والا اسٹور روم تاحال نجی کمپنی (کے ایس بی) کے قبضے میں ہے، جس پر امیر ہانی مسلم نے ہائی کورٹ کے رجسٹرار کو ہدایت دی کہ وہ ایس ایس پی کے توسط سے نجی کمپنی کو سامان کی واپسی اور اسٹور روم میونسپل کمیٹی کے حوالے کرنے کے لیے نوٹس ارسال کریں۔ جسٹس (ر) امیر ہانی مسلم واٹر سپلائی اسٹیشن میں قائم لیبارٹری کا بھی معائنہ کیا۔ اس موقع پر جسٹس (ر( امیر ہانی مسلم میونسپل کمیٹی کے افسران کو ہدایت دی کہ ان کے پاس 15 دن ہیں، صفائی ستھرائی اور تالابوں کی حالت کو بہتر کریں، بصورت دیگر 15 دن کے بعد دوبارہ دورہ کیا جائے گا جس میں غفلت برتنے والوں کیخلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ خیرپور، فیض گنج، ٹھری میرواہ میں واٹر سپلائی اسٹیشنوں کا دورہ کرنے کا مقصد تمام تر امور کا بغور جائزہ لینا ہے، جس کی مکمل رپورٹ تشکیل دی جائے گی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ