بلین ٹری سونامی منصوبہ عالمی معیار کے مطابق ہے، ڈبلیو ڈبلیو ایف

170

پشاور (عبدالبصیر قلندر) بین الاقوامی ادارہ ڈبلیو ڈبلیو ایف نے خیبر پختونخوا میں بلین ٹری سونامی پروجیکٹ پر اعتماد کا اظہار کیا ہے، ڈبلیو ڈبلیو ایف کے صوبائی ریسرچ کوآرڈینٹر سید کامران حسین نے کہا ہے کہ صوبے میں بلین ٹری سونامی پروجیکٹ کے دوران صوبے بھر میں لگائے گئے درخت عین بین الاقومی اصولوں کے مطابق ہیں۔ جسارت کو موصول ہونے والے اعداد و شمار کی روشنی میں منصوبے کی مجموعی افادیت جانچنے کیلیے بلین ٹری منصوبے کے 20 فیصد درختوں کے نمونے حاصل کر کے رپورٹ مرتب کر لی ہے، بلین ٹری سونامی کے منصوبے میں کامیابی حاصل کرنے کیلیے خیبر پختونخوا حکومت کی جانب سے 3 مرحلوں میں درختوں کی کاشت کا عمل جاری ہے تاہم بین الاقومی ادارے کی سروے جائزہ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ تینوں مرحلوں کے دوران کاشت کا عمل درست ہے۔ دنیا کا معتبر ادارہ ڈبلیو ڈبلیو ایف پاکستان سمیت دنیا بھر میں جنگلات، صاف ماحول کی فراہمی، جنگلی و آبی حیاتیات، صاف پانی اور غذائی اجناس کی بقاء پر کام کر رہا ہے اور اس وقت ملک بھر کے بڑے شہروں میں 30 پروجیکٹس میں سرگرم عمل ہے۔ اسی طرح کے پی میں صوبائی حکومت کے منصوبے بلین ٹری سونامی کی سرگرمیوں پر گہری نظر رکھتا ہے۔ ریسرچ کوآرڈینٹر نے اپنی خصوصی گفتگو میں کہا ہے کہ بلین ٹری پروجیکٹ اپنی نوعیت کا ایک منفرد منصوبہ ہے۔ میڈیا میں شائع یہ خبریں بے بنیاد اور من گھڑت ہیں کہ صرف 20 فیصد درختوں کا جائزہ لیا ہے بلکہ ادارے نے سروے کے دوران عالمی معیار کے مطابق 20 فیصد نمونے اکھٹے کیے۔ سروے رپورٹ میں ظاہر کیا گیا ہے کہ صوبے بھر میں منصوبے کے تحت لگائے درخت 100 فیصد درست کاشت ہوئے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ